گرفتاریوں سے کوئی فرق نہیں پڑے گا: جیشِ محمد

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ابھی تک یہ واضح نہیں ہے کہ تنظیم کے سربراہ مسعود اظہر کو تحویل میں لیا گیا ہے یا نہیں

بھارتی شہر پٹھان کوٹ میں قائم بھارتی فضائیہ کے اڈے پر حملے میں نامزد پاکستانی شدت پسند کالعدم تنظیم جیش محمد نے سماجی رابطے کے اپنے صفحے پر ایک پیغام میں کہا ہے کہ کارکنوں کی گرفتاریوں سے تنظیم اور اس کے مقاصد پر کوئی فرق نہیں پڑے گا۔

فیس بک پر ’مکتب الامیر‘ نامی صفحے، جس پر جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر کے ذاتی پیغامات اور مضمون شائع کیے جاتے ہیں، اس صفحے پر جمعرات کی صبح شائع ہونے والے ایک پیغام میں کیا گیا ہے کہ ان گرفتاریوں سے کوئی فرق نہیں پڑے گا۔

’کافر اور منافق ہماری گرفتاری پر خوشیاں منا رہے ہیں، وہ گرفتاری جو ہوئی ہی نہیں، اور اگر ہو بھی جائے تو کیا فرق پڑے گا؟ کچھ بھی نہیں۔‘

اس مختصر بیان میں کہا گیا ہے کہ ان گرفتاریوں سے تنظیم کے عزائم اور’جہاد‘ پر کوئی فرق نہیں پڑے گا۔

پاکستانی حکومت کی جانب سے جیش محمد کے پٹھان کوٹ حملے میں ملوث ہونے کے بھارتی الزام کی تفیتش کے دوران اس کالعدم تنظیم کے بعض کارکنوں کی گرفتاری کا دعویٰ کیا گیا ہے۔

حکومتی اعلان اور کالعدم جیش محمد کے اس ردعمل کے بعد بھی ابھی تک یہ واضح نہیں ہے کہ تنظیم کے سربراہ مسعود اظہر کو تحویل میں لیا گیا ہے یا نہیں۔

تاہم تین روز قبل اسی صفحے پر ایک مضمون میں مسعود اظہر نے خدشہ ظاہر کیا تھا کہ انھیں حراست میں لیا جا سکتا ہے۔

اسی بارے میں