مارگٹ میں ایف سی کی گاڑی پر بم حملہ، چھ ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption یہ حالیہ چند ہفتے میں ایف سی اہلکاروں کو نشانہ بنائے جانے کا دوسرا واقعہ ہے

پاکستان کے صوبے بلوچستان میں دیسی ساختہ بم کے دھماکے میں ہلاک ہونے والے ایس سی اہلکاروں کی تعداد چھ ہو گئی ہے جبکہ ایک زخمی ہے۔

ایف سی کے اہلکار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بی بی سی کو بتایا کہ یہ واقعہ پیر کو کوئٹہ کے مشرق میں 50 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع علاقے مارگٹ میں پیش آیا۔

لورالائی میں ایف سی کی چیک پوسٹ پر حملہ، سات اہلکار ہلاک

’بلوچستان میں دہشت گردی میں بھارتی اور افغان خفیہ اداروں کا ہاتھ ہے‘

اہلکار کا کہنا ہے کہ ایف سی کے جوانوں کی ایک گشتی گاڑی سڑک کنارے نصب ریموٹ کنٹرول بم کا نشانہ بنی۔

ان کے مطابق اس واقعے میں پانچ اہلکار موقع پر ہی ہلاک ہوگئے جبکہ دو زخمی اہلکاروں کو ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

زخمی ہونے والے اہلکاروں میں سے ایک کی حالت تشویش ناک تھی جو بعد میں جان کی بازی ہار گیا۔

خیال رہے کہ یہ حالیہ چند ہفتے میں ایف سی اہلکاروں کو نشانہ بنائے جانے کا دوسرا واقعہ ہے۔

اس سے قبل 29 دسمبر کو مستونگ میں بھی دیسی ساختہ بم کے دھماکے میں ہی ایف سی کا ایک اہلکار ہلاک ہوگیا تھا۔

فرنٹیئر کور کے مطابق صوبہ بلوچستان میں سنہ 2015 کے دوران بلوچستان کے مختلف علاقوں میں فرنٹیئر کور کے اہلکاروں پر مسلح شدت پسندوں نے 941 حملے کیے۔

حکام کے مطابق ان جھڑپوں اور دھماکوں میں فرنٹیئر کور کے 43 اہلکار مارے گئے جبکہ 112 زخمی ہوئے تھے۔

اسی بارے میں