شہباز تاثیر سخت سکیورٹی میں گھر واپس

تصویر کے کاپی رائٹ ISPR
Image caption شہباز تاثیر کو بدھ کے روز ایک خصوصی طیارے میں کوئٹہ سے لاہور اپنے گھر پہنچے ہیں

چار سال چھ ماہ اور چودہ روز کے طویل اور صبر آزما انتظار کے بعد سابق مقتول گورنر سلمان تاثیر کے مغوی بیٹے شہباز تاثیر بالآخر لاہور میں اپنے گھر پہنچ گئے ہیں۔ ایئرپورٹ پر ان کی والدہ، اہلیہ، بہن اور ماموں نے ان کا استقبال کیا اور سخت سکیورٹی میں انھیں اپنے گھر لایا گیا۔

شہباز تاثیر منگل کو کوئٹہ کے علاقے کچلاک میں ایک سکیورٹی آپریشن کے دوران بازیاب کیے گئے تھے۔ انھیں کچلاک سے کمبائنڈ ملٹری ہسپتال (سی ایم ایچ) کوئٹہ منتقل کیا گیا جہاں سے انھیں بدھ کی صبح خصوصی طیارے کے ذریعے لاہور لایا گیا۔

کوئٹہ سے خصوصی طیارے کے ذریعے لاہور پہنچنے پر شہباز تاثیر کی والدہ آمنہ تاثیر، اہلیہ ماہین شہباز، بہن شہربانو تاثیر اور ماموں نے ان کا استقبال کیا۔ ماں طویل عرصہ کے بعد لخت جگر کو بحفاظت پانے کے بعد ان سےلپٹ گئیں اور بڑی دیر تک اپنے بیٹے کو سینے سے لگائے رکھا۔ شہباز تاثیر کی خوشی بھی دیدنی تھی اور وہ اپنے تمام خاندان والوں کو باری باری گلے ملے۔

شہباز تاثیر کو ایئرپورٹ سے گھر لانے کے لیے پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے اپنی بلٹ پروف گاڑی مہیا کی تھی جس میں انھیں گھر لایا گیا جہاں سکیورٹی کے پہلے سے زیادہ سخت انتظامات کیے گئے تھے۔

میڈیا کے نمائندوں کو بھی گلی کی ایک نکڑ تک محدود کر کے رکاوٹیں لگا دی گئی تھیں۔ مرد و خواتین پولیس اہل کاروں کی بھاری نفری کے ساتھ تاثیر فیملی کے ذاتی گارڈز بھی اسلحہ سمیت ان کے گھر کے اندر اور باہر موجود رہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption کوئٹہ شہر سے شمال میں 30 کلومیٹر دور کچلاک میں واقع ہوٹل

میڈیا کے نمائندوں کو گھر کے اندر رسائی بدھ کو بھی نہیں دی جا رہی اور صرف عزیز و اقارب اور تاثیر فیملی کے قریبی دوستوں کو گھر میں داخلے کی اجازت ہے۔ تاثیر فیملی تاحال میڈیا کے سامنے نہیں آئی تاہم ایئر پورٹ پر شہباز تاثیر کے استقبال کی تصاویر میڈیا کو ضرور جاری کی گئی ہیں۔

بازیابی اور گھر منتقلی کے موقع پرکوئٹہ میں لی گئی شہباز تاثیر کی تصاویر بھی میڈیا کو جاری کی گئی ہیں۔ بازیابی کے بعد کی تصاویر میں شہباز کی لمبی داڑھی اور زلفیں دیکھی جاسکتی ہیں جبکہ ان کے سر پر بلوچی ٹوپی ہے اور انھوں نے شلوار قمیض اور واسکٹ زیب تن کر رکھی ہے۔ بدھ کی صبح کی تصاویر میں انھیں پینٹ شرٹ میں دیکھایا گیا ہے۔ انھوں نے داڑھی تراش لی ہے اور چہرے پر ہلکے ہلکے بال دیکھے جاسکتے ہیں سر سے ٹوپی تو ہٹالی ہے لیکن بال اسی طرح لمبے ہیں۔

کوئی بریفنگ نہیں

کوئٹہ میں بی بی سی کے نامہ نگار محمد کاظم کے مطابق سابق گورنر پنجاب سلمان تاثیر کے صاحبزادے شہباز تاثیر کی بازیابی کے حوالے سے حکام نے میڈیا کو کوئٹہ میں کوئی بریفنگ نہیں دی۔

نامہ نگار کا کہنا ہے کہ عمومی طور پر اغوا کے معمولی کیسوں میں بازیابی کی صورت میں حکام باقاعدہ پریس کانفرنس کرتے ہیں۔ تاہم شہباز تاثیر جیسے ہائی پروفائل کیس کے حوالے سے نہ ان کی بازیابی کے فوراً بعد کوئی پریس کانفرنس کی گئی اور نہ ہی ان کی روانگی کے بعد حکام کی جانب سے بریفنگ دی گئی۔

سرکاری حکام نے یہ دعویٰ کیا تھا کہ ان کو کوئٹہ شہر سے شمال میں 30 کلومیٹر دور کچلاک کے علاقے سے بازیاب کرایا گیا۔

اسی بارے میں