افغان پناہ گزینوں کو وطن واپسی کا حکم

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption وزیر اعلی خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے بھی متعدد بار کہہ چکے ہیں کہ افغان پناہ گزینوں کو اپنے وطن واپس بھیجا جائے

پاکستان کے قبائلی علاقے لوئر کرم ایجنسی میں پولیٹکل انتظامیہ نے غیر قانونی طور پر مقیم افغان پناہ گزینوں سے کہا ہے کہ وہ فوری طور پر اپنے علاقوں کو واپس چلے جائیں وگرنہ ان کے خلاف بڑی کارروائی کی جائے گی۔

لوئر کرم ایجنسی میں آج پولیٹکل انتظامیہ نے افغان رہنماؤں کو طلب کرکے انھیں فیصلے سے آگاہ کیا ہے ۔ اس اجلاس میں سکیورٹی اہلکاروں کے علاوہ افغان پناہ گزینوں کے نمائندے اور دیگر اہلکار موجود تھے۔

حکام نے بتایا کہ لوئر کرم ایجنسی کے علاقے میں پناہ گزین خپیانگہ، خلوٹ ، لڑمہ میں غیر قانونی طور پر رہائش پذیر ہیں۔ پولیٹکل انتظامیہ نے اب ان کی اس علاقے میں رہائش پر پابندی عائد کردی ہے اور ان سے کہاگیا ہے کہ وہ اپنے وطن واپس لوٹ جائیں ۔

افغان پناہ گزینوں کے رہنماؤں سے کہا گیا ہے کہ اگر غیر قانونی طور پر مقیم پناہ گزین واپس وطن نہ گئے تو جلد ان کے خلاف کارروائی شروع کی جائے گی ۔

خیبر پختونخوا میں غیر قانونی طور پر مقیم افغان پناہ گزینوں کے خلاف پہلے سے ہی کارروائی جاری ہے ۔ ان پناہ گزینوں کو اپنے ملک واپس بھیجنے کے لیے سرکاری طور پر اس وقت تیزی دیکھی گئی جب پشاور میں آرمی پبلک سکول پر حملہ ہوا تھا۔

وزیر اعلی خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے بھی متعدد بار کہہ چکے ہیں کہ افغان پناہ گزینوں کو اپنے وطن واپس بھیجا جائے کیونکہ ان کے یہاں رہائش سے صوبے میں امن و امان کے مسائل پیدا ہو رہے ہیں ۔

پاکستان افغانستان اور اقوام متحدہ کے ادارہ برائے افغان پناہ گزین یو این ایچ سی آر کے درمیان معاہدے کے تحت افغان پناہ گزینوں کو گزشتہ سال کے آخری مہینے تک واپس جانا تھا لیکن قانونی طور پر مقیم پناہ گزینوں کے یہاں رہائش میں غیر اعلانیہ طور پر اس سال جون تک توسیع کی گئی ہے ۔ اس بارے میں وفاقی سطح پر اب تک کوئی واضح فیصلہ نہیں کیا گیا ۔

ایسی اطلاعات ہیں کہ وزیر اعظم نواز شریف کو اس بارے میں سمری بھیجی گئی ہے ۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ افغان پناہ گزینوں کی پاکستان میں رہائش کو ایک سے دو سال تک مزید توسیع دی جا سکتی ہے لیکن اب تک اس بارے میں کوئی حتمی فیصلہ نہیں ہوا ۔

آرمی پبلک سکول پر حملے کے بعد صوبے میں جاری سٹرائیک اینڈ سرچ آپریشن کے تحت ہزاروں افغان پناہ گزینوں کو گرفتار کرکے واپس وطن بھیجا گیا ہے جبکہ اس سخت کارروائی کے نتیجے میں بڑی تعداد میں پناہ گزین خود بھی اپنے طور پر واپس جا چکے ہیں۔

خیبر پختونخوا میں غیر قانونی افغان پناہ گزینوں کے خلاف بڑی کارروائیاں پشاور، کوہاٹ، نوشہرہ اور دیگر علاقوں میں کی گئی ہیں۔

اسی بارے میں