خضدار کے چیئرمین ضلعی کونسل کے مکان پر دستی بم حملہ

تصویر کے کاپی رائٹ bbc

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع خضدار میں وزیر اعلیٰ بلوچستان کے قریبی رشتہ دار اور ضلع کونسل کے چیئر مین آغا شکیل درانی پر حملے کی ذمہ داری کالعدم عسکریت پسند تنظیم بلوچ لبریشن آرمی نے ذمہ داری قبول کی ہے۔

خضدار میں ایک پولیس اہلکار نے بتایا کہ چیئرمین ضلعی کونسل کے مکان پر نامعلوم افراد نے بدھ کی شب دستی بم سے حملہ کیا ۔اہلکار کے مطابق دستی بم مکان کے اندر صحن میں گر کر زوردار دھماکے سے پھٹ گیا۔

بلوچستان: دستی بم حملے میں دو افراد ہلاک

اس دستی بم کے حملے سے مکان کو معمولی نقصان پہنچا لیکن کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔اہلکار کے مطابق دستی بم پھینکنے والے افراد فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

یاد رہے کہ اس سے قبل بھی بلوچستان کے مختلف علاقوں میں سیاسی کارکنوں کے مکانوں پر نامعلوم افراد نے حملے کیے ہیں۔

آغا شکیل درانی گذشتہ سال خضدار کے ضلعی چیئرمین منتخب ہوئے تھے۔

ان کے مکان پر حملے کے محرکات معلوم نہیں ہوسکے ہیں۔

خضدار شہر کوئٹہ سے جنوب مغرب میں کوئٹہ کراچی ہائی وے پر واقع ہے۔

خضدار شہر چند سال قبل تک بدامنی کی شدید لپیٹ میں تھا لیکن گذشتہ ڈیڑھ دو سال سے شہر میں بدامنی کا کوئی بڑا واقعہ رونما نہیں ہوا۔

اسی بارے میں