’لندن زرداری کے دربار میں حاضری کے لیے جا رہے ہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ PID
Image caption پاکستان میں پاناما لیکس کے معاملے پر سیاسی درجہ حرارت عروج پر ہے اور وزیراعظم نواز شریف نے پہلے ترکی کا دورہ منسوخ کیا تھا

سینیٹ میں قائدِ حزبِ اختلاف سینیٹر اعتزاز احسن کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نواز شریف علاج کی غرض سے لندن نہیں جا رہے ہیں بلکہ وہ آصف زرداری سے ملاقات کے لیے لندن جا رہے ہیں۔

یاد رہے کہ وزیراعظم نواز شریف بدھ کو لندن روانہ ہو رہے ہیں۔

وزیراعظم ہاؤس سے جاری ہونے والے مختصر بیان میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف طبی معائنے کے لیے لندن جا رہے ہیں۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم قومی مصروفیات کی بنا پر طبی معائنہ کئی بار ملتوی کر چکے ہیں۔

وزیراعظم کے ترجمان مصدق ملک کا کہنا ہے کہ لندن میں وزیراعظم نے پیپلز پارٹی کی قیادت سے ملاقات کی خواہش کا اظہار نہیں کیا ہے اور نہ ہی اس سلسلے میں کوئی ملاقات طے ہے۔

پاکستان میں پاناما لیکس کے معاملے پر سیاسی درجہ حرارت عروج پر ہے اور وزیراعظم نواز شریف نے پہلے ترکی کا دورہ منسوخ کیا تھا۔ منگل کو وزیراعظم نواز شریف نے کراچی جانا تھا لیکن وہ کراچی بھی نہیں گئے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے سینیٹر اعتزاز احسن کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نواز شریف ’لندن میں زرداری صاحب کے دربار میں حاضری دینے کے لیے جا رہے ہیں۔‘

پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے اعتزاز احسن نے کہا ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی کہتی تھی کہ لندن کے مے فیئر اپارٹمینٹس نواز شریف کی ملکیت ہیں لیکن وہ مانتے نہیں تھے۔

انھوں نے کہا کہ ’چوہدری نثار نے کہا کہ لندن کے مے فیئر اپارٹمنٹس نواز شریف کے ہی ہیں اور انھوں نے اسی کبھی پوشیدہ نہیں رکھا۔‘

اعتزاز احسن نے کہا کہ ’اگر وہ اپارٹمنٹس نواز شریف کے ہی ہیں تو الیکشن کمیشن میں جمع کروائے گئے اثاثوں کی فہرست میں اُن کا ذکر کیوں نہیں ہے۔‘

حزب اختلاف کی جماعت کے سینیٹر چوہدری اعتزاز احسن نے کہا کہ اس معاملے پر وہ اپنی رائے سے پارٹی کے چیرمین بلاول بھٹو اور شریک چیئرمین آصف علی زرداری کو بھی آگاہ کریں گے۔

سینیٹر اعتزاز احسن نے کہا کہ ’اگر اس بار پیپلز پارٹی نے نواز شریف کا ساتھ دیا تو نقصان پیپلز پارٹی کا ہو گا۔

اسی بارے میں