جلسے میں بدتمیزی، فوٹیج نادرا کو بھجوا دی گئی

تصویر کے کاپی رائٹ Nasir Khan Mohmand

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے شہر لاہور کی پولیس نے تحریک انصاف کے جلسے میں خواتین کے ساتھ بدتمیزی کے واقعے کی تمام فوٹیج نادرا کو شاخت کے لیے بجھوا دی ہے اور نادرا سات مئی تک اپنی رپورٹ پولیس کو دےگا۔

یہ بات تحریک انصاف کی خاتون رہنما عظمیٰ کاردار نے لاہور پولیس حکام سے ملاقات کے بعد بتائی۔

عظمیٰ کاردار نے جمعرات کو لاہور پولیس حکام سے ملاقات میں جلسے میں خواتین کے ساتھ بدتمیزی کے واقعے کی چھان بین کے بارے میں بات کی۔

یکم مئی کو لاہور میں تحریک انصاف کے جلسے میں خواتین کے ساتھ بدتمیزی کا واقعہ پیش آیا۔

یہ دوسرا موقع ہے جب تحریک انصاف کے جلسے میں خواتین کے ساتھ بدتمیزی کی گئی۔ اس سے قبل وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں خواتین کے ساتھ جلسے میں بدتمیزی کی گئی تھی۔

لاہور کے جلسے میں خواتین کے ساتھ بدتمیزی کے واقعے کا پولیس کی مدعیت میں بھی مقدمہ درج کیا گیا ہے جبکہ عظمیٰ کاردار نے بھی اندراج مقدمہ کے لیے پولیس سے رجوع کیا ہے۔

تحریک انصاف کی رہنما نے بتایا کہ پولیس نے دو مقدمات کو ضم کرنے کی پیشکش کی تاہم عظمیٰ کاردار نے اپنی ایف آئی آر پولیس کی ایف آئی آر میں فوری ضم کرنے سے معذوری ظاہر کر دی۔

عظمیٰ کاردار نے بتایا کہ ملاقات میں پولیس حکام نے واقعے کی فوٹیج دکھائی اور بدتمیزی کرنے والے افراد کی شاخت کرائی۔

تحریک انصاف کی رہنما کے مطابق نادرا ذمے داروں کی شاخت کے بارے میں اپنی مرتب کردہ رپورٹ سات مئی کو پولیس کے حوالے کر دے گا۔

تحریک انصاف کی رہنما اور پولیس حکام کے درمیان دوبارہ سات مئی کو ملاقات ہوگی جس میں تفتیش کی پیش رفت پر غور کیا جائے گا۔

اسی بارے میں