ایوان صدر اور وزیر اعظم کے اخراجات ایک ارب سے زیادہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

پاکستان میں جمعہ کو قومی اسمبلی میں پیش کی جانے والے بجٹ دستاویزات کے مطابق گذشتہ مالی سال کے دوران ایوان صدر اور وزیر اعظم سیکریٹیریٹ پر مجموعی طور پر ایک ارب 77 کروڑ روپے سے زیادہ کے اخراجات ہوئے۔

ایوان صدر اور وزیر اعظم سیکریٹیریٹ کے اخراجات کی جو تفصیل بجٹ دستاویزات میں سامنے آئی ہیں ان کے مطابق گذشتہ مالی سال کے دوران ایوان صدر کے اخراجات وزیر اعظم سیکریٹیریٹ سے زیادہ رہے۔

مالی سال 2015-2016 کے دوران ایوان صدر نے ملازمین کی تنخواہوں سمت مختلف مدوں میں 91 کروڑ 84 لاکھ روپے خرچ کیے۔ جن میں ایوان صدر کی مرمت اور دیکھ بحال کے کاموں پر دو کروڑ 22 لاکھ روپے خرچ ہوئے۔

باوجود اس کے کہ ایوان صدر کا خرچہ گذشتہ سال 91 کروڑ سے تجاوز کر گیا تھا آئندہ برس ایوان صدر کے لیے 86 کروڑ 34 لاکھ روپے کا بجٹ مختص کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔

وزیر اعظم سیکٹیریٹ کا بجٹ

سنہ 2014-2015

800,780,000

نظرثانی شدہ بجٹ

  • ملازمین سے متعلق اخراجات 523,079,000

  • روز مرہ اخراجات 125,776,000

  • مرمت اور دیکھ بحال 19,701,000

getty

گذشتہ سال کے بجٹ میں ایوان صدر کے لیے 80 کروڑ روپے مختص کیے گئے تھے لیکن ایوان صدر نے اپنے بجٹ سے گیارہ کروڑ روپے زیادہ خرچ کیے۔

اسی طرح وزیر اعظم کے دفتر نے بھی اپنے اصل بجٹ سے ایک کروڑ سے زیادہ خرچہ کیا۔ وزیر اعظم کے دفتر کے لیے 84 کروڑ 20 لاکھ روپے مختص کیے گئے تھے اور وزیر اعظم کے دفتر نے 85 کروڑ 98 لاکھ روپے خرچ کیے۔

آئندہ سال کے لیے جو نواز شریف حکومت کا حکومت میں چوتھا سال ہو گا اس کے لیے 88 کروڑ 15 لاکھ 94 ہزار روپے کی رقم مختص کی گئی ہے۔

اسی بارے میں