سکیورٹی گارڈ سے گولی چل گئی، پانچ طالبات زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption اس سے پہلے بھی ایک سکول استاد سے گولی چلنے سے پانچویں جماعت کا ایک طالب علم ہلاک ہوگیا تھا

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخواہ کے ضلع سوات میں پولیس حکام کا کہنا ہے کہ ایک سرکاری سکول کے سکیورٹی گارڈ سے غلطی سے گولی چلنے کے واقعے میں پانچ طالبات زخمی ہوگئی ہیں۔

صحافی انور شاہ کے مطابق تھانہ مدین کے ایس ایچ او محمد علی کا کہنا ہے کہ یہ واقعہ مدین میں لڑکیوں کے سرکاری ہائی سکول میں جمعرات کی صبح آٹھ بجے کے قریب پیش آیا۔

سوات میں استاد کی فائرنگ سے طالب علم ہلاک

ایس ایچ او کے مطابق چوکیدار رحیم اللہ کو گرفتار کر کے تھانے منتقل کردیاگیا ہے جبکہ مزید تفتیش جاری ہے۔

زخمی ہونے والی طالبات کو مدین ہسپتال منتقل کیا گیا ہے جہاں کی انتظامیہ کے مطابق انھیں طبی امداد دی جا رہی ہے اور ان کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

اس حوالے سکول انتظامیہ اور ڈسٹرکٹ ایجوکیشن افسر سے رابطے کی بہت کوشش کی گئی لیکن کامیابی نہیں ملی۔

خیال رہے کہ سوات میں اس سے پہلے بھی ایک استاد کے ہاتھوں گولی لگنے سے پانچویں جماعت کا ایک طالب علم ہلاک ہوگیا تھا۔

دہشت گردوں کی جانب سے تعلیمی اداروں پر ہونے والے حملوں کے بعد حکومت اور مقامی انتظامیہ نے حفاظتی انتظامات برقرار رکھنے کے لیے سکول چوکیداروں کو نہ صرف مسلح کیا تھا بلکہ انھیں دہشت گرد حملے ناکام بنانے کی تربیت بھی فراہم کی ہے۔ اس کے علاوہ اساتذہ کو بھی اسلحہ چلانے کی تربیت فراہم کی گئی تھی۔

اسی بارے میں