سوات میں پولیس موبائل پر بم حملہ، پانچ اہلکار زخمی

Image caption عید الفطر کے موقع پر چار لاکھ سے زائد سیاحوں نے یہاں کا رخ کیا ہے

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخواہ کے ضلع سوات میں حکام کا کہنا ہے کہ منگل کی روز ہونے والے ایک بم دھماکے میں پانچ پولیس اہلکار زخمی ہوگئے ہیں۔

تھانہ بحرین کے پولیس اہلکار نے بتایا ہے کہ یہ دھماکہ مانکیال کے علاقے میں اس وقت ہوا جب پولیس موبائل معمول کے گشت پر تھی۔

٭ سوات میں پولیس موبائل پر حملے میں تین اہلکار زخمی

ان کا کہنا تھا کہ ’دھماکے میں پانچ پولیس اہلکار زخمی ہوگئے ہیں جنھیں قریبی ہسپتال منتقل کردیاگیا ہیں۔‘

صحافی انور شاہ کا کہنا ہے کہ تھانہ بحرین کے حکام کے مطابق دھماکے میں پولیس موبائل کو شدید نقصان پہنچا ہے جبکہ زخمی ہونے والے پولیس اہلکاروں میں ایک حوالدار احسان اللہ اور چار پولیس اہلکار جمال، اشفاق، اعجاز اور ولی اللہ شامل ہیں۔

دھماکے کے بعد پولیس کی بھاری نفری نے علاقے کو گھیرے میں لیکر سرچ آپریشن شروع کر دیا ہے اور جگہ جگہ ناکہ بندیاں بھی کی گئی ہیں۔

خیال رہے کہ بحرین سوات کا سیاحتی علاقہ ہے اور پولیس کے مطابق اس سے پہلے بھی اس علاقے میں سکیورٹی اہلکاروں پر حملہ ہوئے ہیں۔

واضح رہے کہ سوات میں قیام امن کے بعد عید الفطر کے موقع پر سرکاری اعدادوشمار کے مطابق چار لاکھ سے زائد سیاحوں نے یہاں کے سیاحتی مقامات کا رخ کیا جبکہ بحرین اور کالام میں موجود تمام ہوٹلز سیاحوں سے بھر گئے تھے۔

ہزاروں کی تعداد میں سیاحوں نے دریا کے کنارے، مساجد اور کرائے کے مکانوں میں قیام کیا تاہم مقامی لوگوں کے مطابق اس دھماکے سے علاقے میں خوف کی فضا پھیل گئی ہے۔

اسی بارے میں