’اوکاڑہ میں جھڑپ کے دوران چھ شدت پسند ہلاک‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے محکمۂ انسدادِ دہشت گردی کا کہنا ہے کہ اوکاڑہ کے قریب ایک مقابلے میں چھ شدت پسندوں کو ہلاک کیا گیا ہے۔

ڈی پی او اوکاڑہ فیصل رانا کے مطابق یہ جھڑپ اوکاڑہ کے نواحی گاؤں چک 28/2 آر میں ہوئی جہاں شدت پسندوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے پر منگل اور بدھ کی درمیانی شب کارروائی کی گئی۔

٭ گوجرانوالہ میں چار شدت پسندوں کی ہلاکت کا دعویٰ

٭ ’القاعدہ کمانڈر یاسر پنجابی پانچ ساتھیوں سمیت ہلاک‘

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ جھڑپ کے دوران شدت پسندوں کی فائرنگ سے دو پولیس اہلکار بھی زخمی ہوئے ہیں۔

پولیس نے بتایا ہے کہ جب چھاپے کے دوران ایک مکان کو گھیرے میں لیا گیا تو وہاں چھپے شدت پسندوں نے فائرنگ شروع کر دی۔

انسداد دہشت گردی کے ادارے نے بتایا کہ پولیس کی جوابی فائرنگ کے نتیجے میں چھ شدت پسند ہلاک ہوگئے۔

ڈی پی او اوکاڑہ فیصل رانا نے بتایا کہ جائے وقوعہ سے کلاشنکوف، راکٹ لانچر اور گولیوں سمیت بھاری مقدار میں اسلحہ، دھماکہ خیز مواد اور نقشے بھی برآمد ہوئے ہیں۔

تاحال حکام کی جانب سے ہلاک کیے جانے والے افراد کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی۔

پولیس کے بقول یہ افراد بظاہر افغان نظر آتے ہیں تاہم ان کے شناختی کارڈوں پر خیبر پختونخوا کے شمالی ضلع شانگلہ کے پتے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ ان کی شناخت کے بارے میں معلومات اکٹھی کی جا رہی ہیں۔

دوسری جانب انسداد دہشت گردی کے ادارے کے مطابق لاہور میں ایک کارروائی کے دوران تین شدت پسندوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔

سکیورٹی فورسز نے اطلاع ملنے پر لاہور کے علاقے بند روڈ پر کارروائی کر کے تین افراد کو گرفتار کیا جن کا تعلق ایک ممنوعہ تنظیم سے بتایا گیا ہے۔

خیال رہے کہ رواں برس مارچ میں لاہور کے گلشنِ اقبال پارک میں بم دھماکے کے بعد سے صوبہ پنجاب میں محکمۂ انسدادِ دہشت گردی کی کارروائیوں میں تیزی دیکھی گئی ہے اور اب تک کی جانے والی کارروائیوں کے دوران درجنوں شدت پسندوں کی ہلاکت کے دعوے کیے گئے ہیں۔

اسی بارے میں