کوئٹہ میں فائرنگ، ہزارہ قبیلے کے دو افراد ہلاک

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے شہر کوئٹہ میں نامعلوم افراد کی فائرنگ میں ہزارہ قبیلے کے دو افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ ہزارہ قبیلے سے تعلق رکھنے والے افراد رکشے میں سریاب روڈ پر جا رہے تھے جب ان پر فائرنگ کی گئی۔

٭ دیواروں پر معاشرتی مسائل کی عکاسی

کوئٹہ میں ہمارے نامہ نگار محمد کاظم نے بتایا کہ پولیس کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والا ایک شخص مچھ کے علاقے میں کوئلہ کان میں کام کرتا تھا۔

حکام کے مطابق یہ دونوں افراد ہزار گنجی اڈے کی جانب جا رہے تھے جہاں سے عام گاڑی میں کوئلہ کان جانا تھا۔ لیکن موٹر سائیکل پر سوار دو نامعلوم افراد نے سریاب روڈ پر ڈگری کالج کے قریب ان پر فائرنگ کر دی۔

واضح رہے کہ چوبیس گھنٹوں میں سریاب کے علاقے میں یہ دوسرا واقعہ ہے۔ اس سے قبل رات کو فائرنگ کے ایک واقعے میں لیویز فورس کا ایک اہلکار ہلاک ہوا۔

لیویز فورس کے اہلکار پر حملے کا واقعہ سریاب کے علاقے کیچی بیگ میں پیش آیا۔

وادی کوئٹہ کے مشرقی دامن مری آباد اور مغربی علاقے ہزارہ ٹاؤن میں رہنے والے ہزاروں کی آبادی پانچ لاکھ سے زائد بتائی جاتی ہے اور شہر میں دہائیوں سے آباد ان ہزاروں کو اب ان کے علاقوں تک ہی محدود کر دیا گیا ہے۔

اسی بارے میں