جھیل سیف الملوک کے قریب برفانی تودہ گرنے سے ہلاکتیں

پاکستان میں قدرتی آفات سے نمٹنے کے صوبائی ادارے پی ڈی ایم اے کا کہنا ہے کہ خیبر پختونخوا کے سیاحتی مقام جھیل سیف الملوک کے قریب برفانی تودہ گرنے سے تین خواتین ہلاک ہوگئی ہیں۔

اتوار کو خیبر پختونخوا میں پی ڈی ایم اے کے ترجمان نے بتایا ہے کہ ہلاک ہونے والی تینوں خواتین کا تعلق کراچی سے ہے جو سیاحتی مقامات کی سیر کے لیے یہاں آئی تھیں۔

٭ ’سیلفی کا جنون‘، دو افراد دریائے کنہار میں ڈوب گئے

ترجمان کے مطابق یہ واقع ناران میں جھیل روڈ پر پیش آیا ہے۔ برفانی تودے تلے دب کر ہلاک ہونے والی خواتین میں رخسانہ بی بی، سنبل بی بی اور حنا شامل ہیں۔

دوسری جانب مقامی ذرائع ابلاغ کے مطابق یہ تینوں خواتین جھیل سیف الملوک روڈ پر گلیشیئر کے قریب کھڑے ہو کر سیلفی لینے کی کوشش کر رہی تھیں کہ اچانک برفانی تودا آگرا۔

مقامی میڈیا نے پولیس کے حوالے سے بتایا ہے کہ تینوں لاشیں نکال لی گئی ہیں اور انھیں مقامی ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ اس سے قبل سیلفی کے جنون نے سنیچر کو صوبہ خیبر پختونخوا کی وادی کاغان میں دو افراد کی جان لے لی تھی۔

بالاکوٹ کے پولیس افسر ارشد خان کے مطابق ملتان کی رہائشی فیملی ایوب پل کے ساتھ دریائے کنہار کے کنارے سیلفی لے رہے تھے کہ 29 سالہ سہیل کا پتھر پر سے پاؤں پھسلا اور وہ دریائے کنہار میں گر گئے جن کو بچانے کی خاطر ان کی قریبی عزیزہ راشدہ حنیف نے بھی دریا میں چھلانگ لگا دی اور دونوں ڈوب گئے۔

اسی بارے میں