سعودی وزیر دفاع کا پاکستان کا مختصر دورہ

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption دونوں ممالک نے مشرقِ وسطیٰ کے حالات اور امن و امان کی صورتحال پر غور کیا ہے۔

سعودی عرب کے وزیر دفاع اور نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان السعود نے پاکستان کا مختصر دورہ کیا۔

سعودی وزیر دفاع اتوار اور پیر کی درمیانی شب اسلام آباد پہنچے۔

اسلام آباد پہنچنے کے بعد انھوں نے وزیراعظم نواز شریف سے ملاقات کی۔ ملاقات کے دوران پاکستان کے وزیر دفاع خواجہ آصف اور مسلح افواج کے سربراہان بھی موجود تھے۔

وزیراعظم کے ساتھ ملاقات کے دوران پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان دو طرفہ تعلقات کے فروغ پر بات ہوئی۔

سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی کے مطابق سعودی وزیر دفاع نے مسلمان ممالک سمیت دنیا بھر میں ہونے والی پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا۔

دونوں ممالک نے مشرقِ وسطیٰ کے حالات اور امن و امان کی صورتحال پر غور کیا ہے۔

سعودی خبر رساں ایجنسی کا کہنا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان دو طرفہ تعلقات میں وسعت آ رہی ہے۔

سرکاری ایجنسی کے مطابق سعودی وزیر دفاع نے وزیراعظم نواز شریف سے ملاقات میں اس بات پر زور دیا کہ پالیسیوں میں ہم آہنگی اور بین الاقوامی فورم پر ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کو مزید جاری رکھا جائے گا۔

سعودی عرب کے نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے اپنے مختصر دورے میں پاکستان کی بری فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف سے بھی ملاقات کی۔

وزیراعظم نواز شریف اور آرمی چیف راحیل شریف سے ملاقات کے بعد سعودی وزیر دفاع اپنے ملک واپس لوٹ گئے۔

یاد رہے کہ سعودی عرب میں شیعہ عالمِ دین کو پھانسی دینے کے بعد ایران اور سعودی عرب کے حالات کشیدہ ہو گئے تھے۔

ایران اور سعودی عرب کی کشیدگی اور یمن میں حوثی باغیوں کے خلاف سعودی کمان میں جاری آپریشن شروع کرنے کے بعد بھی سعودی وزیر دفاع نے پاکستان کا دورے کیا تھا۔

اسی بارے میں