بلوچستان: تشدد کے واقعات میں پانچ ہلاک

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دو مختلف علاقوں میں تشدد کے واقعات میں لیویز فورس کے ایک اہلکار سمیت پانچ افراد ہلاک ہوگئے۔

کوئٹہ میں بی بی سی کے نامہ نگار محمد کاظم کے مطابق، ان میں سے تین افراد کی ہلاکت کا واقعہ ضلع آواران کے علاقے جھاؤ میں پیش آیا ۔

آواران میں انتظامیہ کے ذرائع نے اس واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ اس علاقے میں نامعلوم مسلح افراد نے ایک گھر کے اندر گھس کر فائرنگ کی ۔

فائرنگ کے نتیجے میں ایک ہی خاندان کے تین افراد ہلاک ہوگئے۔ ہلاک ہونے والوں میں ایک کمسن بچہ بھی شامل ہے ۔

انتظامیہ کے ذرائع کے مطابق مارے جانے والے افراد کو کسی سے کوئی دشمنی نہیں تھی۔گزشتہ چند ماہ کے دوران آواران میں گھروں کے اندر گھس کر لوگوں کو ہلاک کرنے کے متعدد واقعات پیش آئے ہیں ۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

آواران سے متصل ضلع کیچ کے علاقے میں تشدد کے ایک اور واقعہ میں لیویز فورس کا ایک اہلکار ہلاک ہوا۔

انتظامیہ کے ذرائع کے مطابق یہ واقعہ زعمران کے علاقے میں پیش آیا جہاں نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے فائرنگ کرکے لیویز فورس کے ایک اہلکار کو ہلاک کیا۔

کیچ ہی کے علاقے کپکپار میں بھی نامعلوم مسلح افراد نے ایک شخص کو ہلاک کیا۔ انتظامیہ کے ذرائع کا کہنا تھا کہ حملے میں ایک مچھلی فروش ہلاک ہوا۔ ان واقعات کے محرکات تاحال معلوم نہیں ہوسکے۔

آواران اور کیچ کا شمار بلوچستان کے ان علاقوں میں ہوتا ہے جو کہ شورش سے زیادہ متائثر ہیں۔