سارک اینٹی کرپشن اجلاس میں انڈیا کی شرکت

تصویر کے کاپی رائٹ epa
Image caption گزشتہ ماہ انڈین وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کی سارک اجلاس کے لیے اسلام آباد سے پہلے مظاہرے ہوئے تھے۔

جنوبی ایشیائی ممالک کے اشتراک سے سارک کا بدعنوانی کے خاتمہ کے لیے پہلا اجلاس پیر کو اسلام آباد میں شروع ہو گیا ہے۔

اسلام آباد میں بی بی سی کی نامہ نگار ارم عباسی کے مطابق دو روزہ اجلاس میں بھارت میں انسداد بدعنوانی کے قومی ادارے سینٹرل ویجیلنس کمیشن کے سربراہ شری پریمناشو بسواس بھی شرکت کر رہے ہیں۔

مسئلہ کمشیر پر جاری پاکستان اور بھارت میں بدترین کشیدگی کے تناظر میں بھارتی وفد کے دورۂ پاکستان کو بہت اہمیت دی جا رہی ہے۔

پاکستان کے قومی احتساب بیورو (نیب) کے سربراہ قمر زمان چوہدری نے اجلاس سے پہلے ایک پریس ریلیز میں خطے میں بدعنوانی کے خاتمے کے لیے سارک قومی انسداد بدعنوانی فورم کے قیام کی تجویز پیش کی ہے۔

ان کے مطابق اس مقصد کے لیے اجلاس میں سارک مملک کے درمیان مشترکہ تحقیقاتی لائحہ عمل، اثاثے واپس لینے اور معلومات کے تبادلہ کی حکمت عملی پر بات چیت ہو گی۔

اجلاس میں سارک مملک جنوبی ایشا میں بدعنوانی کے اسباب کو اجاگر کریں گئے جبکہ اجلاس میں شریک مختلف ممالک کے سرکاری وفود اپنے تجربات پر روشنی ڈالیں گے۔ عوام کو بدعنوانی کے نقصانات سے متعلق آگاہی کے لیے سارک ممالک کے درمیان تعاون اور اقدامات پر بھی بات چیت ہو گی۔

اجلاس میں سری لنکا، نیپال ،بھوٹان اور سارک اشتراک میں شامل دیگر جنوبی ایشائی ممالک کے وفود شرکت کر رہے ہیں۔

متعلقہ عنوانات