جنگ گروپ کے ڈائریکٹر پشاور سے اغوا

تصویر کے کاپی رائٹ Facebook
Image caption عابد عبداللہ کا تعلق لاہور سے تھا اور انھیں پشاور پہنچنے پر اغوا کیا گیا

پاکستان کے صوبہ خیبرپختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں پولیس کے مطابق پاکستانی میڈیا ہاؤس ’جنگ گروپ‘ کے ڈائریکٹر کوآرڈینیشن عابد عبداللہ کو نامعلوم افراد نے اغوا کر لیا ہے۔

اُن کے اغوا کا مقدمہ درج کر کے تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں۔

جنگ گروپ کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ بدھ کی شب رات تین بجے کے قریب عابد عبداللہ پشاور کے علاقے حیات آباد میں جنگ کے پریس سے نکل کر ہوٹل جا رہے تھے کہ چھ سے آٹھ مسلح افراد نے انھیں یرغمال بنایا۔

عابد عبداللہ کا تعلق لاہور سے ہے اور جنگ گروپ کے مطابق انھیں لاہور سے پشاور پہنچنے کے بعد نامعلوم افراد نے اغوا کیا۔

عابد عبداللہ کے ڈرائیور ظفر حسین نے پولیس کو بتایا کہ حملہ آور دو گاڑیوں میں سوار تھے اور حیات آباد کے علاقے میں انھیں نامعلوم افراد نے روکا اور تین افراد گاڑی میں بیٹھ گئے۔

حیات آباد پولیس کو دیے گئے ڈرائیور کے بیان کے مطابق اغوا کاروں نے ایک مقام جا کر گاڑی رکوائی اور عابد اللہ کو اپنے ساتھ لے گئے۔

اغوا کاروں نے عابد عبداللہ اور ڈرائیور کا موبائل فون بھی اپنے قبضے میں لے لیا۔

پولیس نے ڈرائیور کے بیان کے بعد نامعلوم افراد کے خلاف عابد عبداللہ کے اغوا کی ایف آئی آر درج کر لی ہے۔

جنگ گروپ کے مطابق خیبر پختوانخوا کے آئی جی ناصر خان درانی کا کہنا ہے کہ اس مقدمے کی تفتیش سینیئر پولیس افسران کر رہے ہیں اور توقع ہے کہ جلد عابد عبداللہ کو بازیاب کروا لیا جائے گا۔

یہ پہلی مرتبہ نہیں ہے جب کسی صحافی یا صحافتی اداروں سے وابستہ افراد کو اغوا کیا گیا ہے۔ ماضی میں بھی کوئٹہ، پشاور اور اسلام آباد سمیت مختلف شہروں میں صحافیوں کے اغوا کے واقعات پیش آچکے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں