BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
آر ایس ایس کیا ہے
آر ایس ایس کیا ہے
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Sunday, 08 April, 2007, 15:57 GMT 20:57 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
پاراچنار فسادات: ’امریکی ایجنڈہ ہے‘
 

 
 
پریس کانفرنس کے دوران سابق سینٹر طارق چودھری نے تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کیا
پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے اس خدشے کا اظہار کیا ہے کہ پارا چنار میں ہونے والے شیعہ سنی فسادات امریکی ایجنڈے کے تحت ہورہے ہیں کیونکہ امریکہ ایران کے خلاف پاکستان کی سرزمین استعمال کرنا چاہتا ہے۔

یہ بات انہوں نے اتوار کو لاہور میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

تحریک انصاف کے چئیر مین نے کہا کہ امریکی نائب صدر ڈک چینی کے پاکستان آنے کا مقصد تھا کہ پاکستان کی سرزمین سے ایران کے خلاف دہشت گردی شروع کرائی جائے اور شیعہ سنی فساد پاکستان میں کرایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ شیعہ سنی اختلافات پیدا کرنے کے لیے صدر مشرف کو استعمال کرنا چاہتا ہے۔

عمران خان نے صدر جنرل پرویز مشرف سے مطالبہ کیا کہ وہ امریکہ پر واضح کردیں کہ اگر ایران پر حملہ کیا گیا تو دہشت گردی کےخلاف جنگ میں اس کاساتھ نہیں دیاجائےگا اور پاکستان میں اس کے تمام اڈے بند کردیئے جائیں گے۔

پریس کانفرنس کے دوران سابق سینٹر طارق چودھری نے تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کیا۔

عمران خان نے کہا کہ قومی احتساب بیورو یعنی نیب کا ادارہ صرف سیاستدانوں کو بلیک میل کرنے کے قائم کیا گیا ہے اسے بند کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ نیب میں حکمران مسلم لیگ کے تمام اراکین کی فائلیں رکھی گئی ہیں اور اس کے ذریعے یہ پارٹی بنائی گئی اور قائم رکھی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ چیف جسٹس افتخار چودھری جب بحال ہونگے تو وہ دو معاملات سپریم کورٹ میں لے جائیں گے ایک تو یہ کہ نیب کا احتساب کیا جائے کیونکہ یہ ادارہ خود قومی خزانے پر بوجھ ہے اور دوسرا یہ کہ صدر مشرف کے خلاف قوم کے پیسوں سے سیاسی جلسےکرنے پر کارروائی کی جائے۔

انہوں نے کہا کہ صدر مشرف کے باوردی جلسوں میں شرکت کرنے پر تنقید کی اور الیکشن کمشن کو مخاطب کرکے یہ سوال اٹھایا کہ کیا وہ ایسا کرسکتے ہیں ؟

انہوں نے کہا کہ صدر مشرف نے پاکستان کی فوج کا بیڑہ غرق کر دیا ہے اور سوال یہ ہے کہ کیا یہ قوم کی فوج ہے یا پھر صدر مشرف یا ق لیگ کی فوج ہے؟

عمران خان نے سیاسی جماعتوں سے اپیل کی وہ اپنے اختلافات بھلا کرسپریم جوڈیشل کونسل کی سماعت والے دن یعنی تیرہ اپریل کو احتجاجی مظاہرے میں شریک ہوں۔

مسلم لیگ نواز کے نائب صدر خواجہ سعد رفیق نے بھی لاہور پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بالکل اسی قسم کا مطالبہ کیا تھا۔خواجہ سعد رفیق کو اکیس روز کی قید کے بعد کل شام ہی میانوالی جیل سے رہا ئی ملی ہے۔انہیں اٹھارہ مارچ کو لاہور میں نیلا گنبد کے باہر سے اس وقت گرفتار کیا گیا تھا جب وہ چیف جسٹس کے حق میں ہونے والے ایک احتجاجی مظاہرے کی قیادت کرنا چاہتے تھے۔

 
 
اسی بارے میں
’مشرف کےخلاف تحریک چلے گی‘
12 November, 2006 | پاکستان
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد