افغان طالبان نے ہلمند میں ہونے والے حملے کی ڈرون کیمرے سے بنی ویڈیو جاری کر دی

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption ویڈیو میں دیکھے جانے والے مناظر کے مطابق امریکی ساختہ عسکری گاڑی ایک کمپاؤنڈ میں داخل ہوتی ہے اور زور دار دھماکے سے پھٹ جاتی ہے۔

افغانستان سے اطلاعات ہیں کہ طالبان نے ہلمند صوبے میں پولیس کے ایک مرکز پر کیے گئے خودکش حملے کی ویڈیو جاری کی ہے اور اس ویڈیو کو ڈرون کیمرے سے بنایا گیا ہے۔

برطانوی خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق ویڈیو میں طالبان کے ایک خود کش بمبار کو دیکھا جا سکتا ہے جو فوجیوں کے زیر استعمال ایک خصوصی گاڑی کو پولیس سٹیشن کی جانب لے جا رہا ہے۔

افغان حکومت کے ایک عہدے دار کا کہنا ہے کہ طالبان کی جانب سے انٹرنیٹ پر جاری ہونے والی ویڈیو حقیقی معلوم ہوتی ہے۔

یہ پہلی مرتبہ ہے کہ افغان طالبان نے ڈرون کیمرے سے بنائی گئی ویڈیو جاری کی ہے۔

روئٹرز کے مطابق ویڈیو کا دورانیہ 23 منٹ ہے جس میں ایک مشتبہ خودکش بمبار امریکی ساختہ فوجی گاڑی ’ہموی‘ کے سامنے کھڑا ہے۔

ویڈیو میں موجود شخص یہ کہہ رہا ہے کہ 'یہ میری زندگی کا پر مسرت موقع ہے، میں افغانستان کی فورسز کو کہتا ہوں کہ وہ اپنے کیے پر شرمندہ ہوں اور طالبان کا ساتھ دیں ورنہ غیر ملکیوں کی جانب سے ملنے والے آلات ہم انھی کے خلاف استعمال کریں گے اور کچھ نہیں کر سکیں گے۔‘

اس کے بعد ڈرون پر نصب کیمرا خودکش حملے کو فلمبند کرتا ہے۔ ویڈیو میں دیکھے جانے والے مناظر کے مطابق امریکی ساختہ عسکری گاڑی ایک کمپاؤنڈ میں داخل ہوتی ہے اور زور دار دھماکہ ہوتا ہے۔

ہلمند میں موجود ایک حکومتی عہدے دار نے بتایا کہ 3 اکتوبر کو ہونے والے اس خود کش حملے میں ڈسٹرکٹ پولیس چیف اور دیگر کئی عہدے دار ہلاک ہوئے تھے۔

ویڈیو میں مختلف گرافکس بھی استعمال کیے گئے ہیں۔ یاد رہے کہ اس سے قبل شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ نے شام اور عراق میں شدت پسند حملوں کی ویڈیوں میں اسی قسم کی ٹیکنالوجی استعمال کی ہے۔

اسی بارے میں