افغان صوبہ غور میں دولت اسلامیہ نے 30 یرغمالی شہری قتل کر دیے

طالبان تصویر کے کاپی رائٹ AP

افغانستان کے صوبہ غور میں حکام کا کہنا ہے کہ شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ نے 30 افراد کو اغوا کرنے کے بعد قتل کر دیا ہے۔

صوبہ غور کے حکام نے بی بی سی کو بتایا کہ دولت اسلامیہ نے ان شہریوں کو اس وقت یرغمال بنایا جب وہ پہاڑوں پر لکڑیاں جمع کر رہے تھے۔

حکام نے بتایا کہ ان شہریوں کو دولت اسلامیہ کے شدت پسندوں نے اس وقت گولیاں مار کر ہلاک کیا جب مقامی افراد نے ان کو بچانے کی کوشش کی۔

صوبہ غور کے ترجمان نے بتایا کہ مقامی افراد کی فائرنگ سے دولت اسلامیہ کا مقامی کمانڈر بھی ہلاک ہوا ہے۔

گورنر ناصر خازے نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پر کو بتایا کہ ہلاک ہونے والوں میں بچے اور خواتین بھی شامل ہیں۔

یاد رہے کہ افغانستان میں دولت اسلامیہ کی حمایت میں اضافہ دیکھنے کو ملا ہے اور کچھ علاقوں میں دولت اسلامیہ طالبان کی عملداری کو بھی چیلنج کر رہی ہے۔

اطلاعات کے مطابق جنوری 2015 سے افغانستان کے مختلف علاقوں میں طالبان اور دولت اسلامیہ کے درمیان جھڑپیں بھی ہوئی ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں