سات انڈین سفارتخانوں کی ویب سائٹ ہیک

ہیکنگ تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ہیکروں نے ہیکنگ کے لیے بنیادی ایس کیو ایل کی کمزوری کا فائدہ اٹھایا ہے

انڈیا کے سات سفارتخانوں کی ویب سائٹ کو سوموار کو ہیک کر لیا گیا ہے اور مبینہ طور پر بہت سی معلومات کو آن لائن پر پوسٹ کیا گیا ہے۔

انڈین خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ انھیں اس بارے میں علم ہے اور وہ اسے درست کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

انڈیا کے یہ ساتوں سفارت خانے یورپ اور افریقی ممالک میں ہیں۔

پاکستانی اور بھارتی ویب سائٹس کی ہیکنگ

انڈیا کی وزارت خارجہ کے ترجمان وکاس سوروپ نے کہا: 'ہم اس مسئلے سے واقف ہیں اور ہمیں اسے درست کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔'

انڈیا کے اخبار ہندوستان ٹائمز کے مطابق کپوسٹکی اور کاسیمیئرز نامی ہیکروں نے ٹوئٹر پر دعوی کیا ہے کہ انھوں نے جنوبی افریقہ، لیبیا، ملاوی، مالی، اٹلی، سوئٹزرلینڈ اور رومانیہ میں موجود انڈین سفارتخانوں کی ویب سائٹ کو ہیک کیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter/Kapustkiy
Image caption ہیکنگ کا دعویٰ کرتے ہوئے یہ پوسٹ کی گئي تھی

انھوں نے چوری کردہ معلومات کو پیسٹ بن ڈاٹ کام نامی ویب سائٹ پر پوسٹ کیا ہے جس میں سفارت خانے کی تفصیلات کے علاوہ وہاں کے سٹاف کے پاسپورٹ کی تفصیلات بھی شامل ہیں۔

انھوں نے مبینہ طور پر بہت سے ہندوستانیوں کی تفصیلات بھی آن لائن جاری کر دی ہیں۔

اس سے قبل بھی انڈین سفارتخانوں کی ویب سائٹ ہیک کی جا چکی ہے۔

دونوں ہیکروں میں سے ایک نے ٹوئٹر پر ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ انھوں ایسا اس لیے کیا کہ ان کے سکیورٹی انتظامات خراب تھے اور انڈیا کے سفارتخانے ہونے کے سبب ان کے سکیورٹی کے انتظامات بہتر ہونے چاہیے۔

ہیکروں نے دعویٰ کیا ہے کہ بہت سی دوسرے انڈین سفارتخانوں کے بھی انٹرنیٹ محفوظ نہیں ہیں۔

ان دونوں کا تعلق ہالینڈ کے پینٹیسٹر سے بتایا جاتا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں