قومی ترانے کا احترام نہ کرنے پر غداری کا الزام

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

ایک انڈین مصنف کو مبینہ طور پر قومی ترانے کی تضحیک کرنے پر غداری کے الزامات کا سامنا ہے۔

٭ انڈیا: سینیما گھروں میں قومی ترانہ بجانے کا حکم

اتوار کو کمال سی چاوارا کو پولیس نے اس وقت ریاست کیرالہ سے حراست میں لیا جب بی جے پی کے یوتھ ونگ کی جانب سے ان کے بارے میں شکایت موصول ہوئی۔

خیال رہے کہ گذشتہ ماہ سپریم کورٹ نے حکم دیا تھا کہ ہر فلم کے آغاز پر تمام سینما گھروں میں قومی ترانہ بجایا جائے۔

اطلاعات کے مطابق کیرالہ اور تمل باڈو میں تقریباً 20 افراد کو اس وجہ حراست میں لیا گیا تھا کیونکہ وہ فلم سے قبل قومی ترانے کی تعظیم میں کھرے نہیں ہوئے تھے۔

رپورٹ کے مطابق بی جے پی کے یوتھ ونگ کی جانب سے درج کروائی جانے والی شکایت میں دراصل مسٹر چاوارا کی ایک فیس بک پوسٹ کے بارے میں تھی جس میں انھوں نے مبینہ طور پر قومی ترانے کی بے عزتی کی تھی۔ بظاہر وہ پوسٹ ان کی ایک کتاب کا اقتباس تھی۔

این ڈی ٹی وی سے گفتگو میں سینئیر پولیس افسر ساتیش بینو نے بتایا کہ مصنف سے ان کی متنازع فیس بک پوسٹ کے بارے میں تحقیقات کی جا رہی ہیں اور انکے خلاف عذاری کے الزامات ہیں۔

ادھر چنیئی پولیس کا کہنا ہے کہ آٹھ افراد کو فلم سے قبل قومی ترانے کے احترام میں کھڑا نہ ہونے پر زدو کوب کیا گیا اور برا بھلا کہا گیا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں