انڈین جھنڈے کے ڈور میٹ، ایمازون پر تنقید

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

انڈیا کی وزیر خارجہ نے بین الاقوامی آن لائن سامان بیچنے والی کمپنی ایمازون کو انڈیا کے جھنڈے کے بنے ہوئے ڈور میٹ بنانے پر تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

انڈیا کی وزیر خارجہ سشما سوراج نے ٹویٹ میں ایمازون سے کہا ہے کہ وہ غیر مشروط معافی مانگے اور ان ڈور میٹس کی فروخت کو فوری طور پر روکے۔

انھوں نے مزید کہا ہے کہ اگر ایمازون ایسا نہیں کرتی تو انڈیا ایمازون کے حکام کے انڈین ویزے منسوخ کر دے گا اور مزید ویزے جاری نہیں کرے گا۔

ایمازون نے کہا ہے کہ اس نے اپنی ویب سائٹ سے یہ ڈور میٹس ہٹا دیے ہیں۔

سشما سوراج نے ٹویٹ میں کینیڈا میں انڈین ہائی کمشن سے کہا ہے کہ وہ اس معاملے کو ایمازون کے ساتھ اٹھائے۔

یہ ڈور میٹس ایمازون کی سائٹ پر ایک تھرڈ پارٹی بیچ رہی تھی۔ اس تھرڈ پارٹی نے ان ڈور میٹس کے بارے میں کہا تھا کہ یہ آسانی سے دھوئے جا سکتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

ایمازون کی ترجمان نے کہا کہ یہ مصنوعات اب برائے فروخت نہیں ہیں۔

یاد رہے کہ ایمازون مختلف ممالک کے جھنڈوں سے بنے ڈور میٹس بیچتا ہے تاہم انڈیا میں اس کو جھنڈے کی بےحرمتی تصور کیا جاتا ہے اور ایسا کرنے پر جرمانہ اور سزا ہوتی ہے۔

گذشتہ جولائی میں ایمازون اس وقت اسی قسم کے تنازعے کی زد میں آ گیا تھا جب اس نے ہندو دیوتاؤں کے ڈور میٹس فروخت کیے تھے۔

متعلقہ عنوانات