کشمیر میں شادیوں پر شاہ خرچیوں پر پابندی

مہندی تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption کشمیر میں شادیوں پر عام طور پر اچھا خاصا صرفہ آتا ہے

انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں ریاستی حکومت نے شادیوں پر بےدریغ اخراجات پر پابندی عائد کر دی ہے۔

دلہن کے والدین 500 سے زیادہ مہمانوں کو مدعو نہیں کر سکتے اور دلہے والوں کے لیے یہ تعداد 400 تک محدود کر دی گئی ہے۔

حکومت نے یہ بھی کہا ہے کہ کھانے کی اشیا میں سات اہم ڈشوں سے زیادہ نہ ہوں تاکہ اس بات کی یقین دہانی ہو کہ کھانا برباد نہ ہو۔

٭ انڈیا کی پرتعیش اور متنازع شادی، تصاویر میں

٭ کشمیر کی ضيافتیں

٭ ’انڈیا میں جہیز کی وجہ لڑکیوں کی بدصورتی‘

ایک رکن پارلیمان نے ایک بل کی تجویز پیش کی ہے جس کے تحت پورے ملک میں اس قسم کی مہنگی شادیوں پر پابندی عائد ہو سکے۔

خیال رہے کہ کشمیر میں شادیاں مہنگی ہیں اور مقامی روایتی وازوان کی دعوت پر بہت خرچ آتا ہے کیونکہ اس میں سبزیوں اور گوشت پر مبنی مختلف اقسام کی ڈشز ہوتی ہیں۔

ریاستی حکومت نے کہا ہے کہ اس پابندی کا اطلاق رواں سال یکم اپریل سے ہوگا اور فضول خرچی والی شادیوں، کھانے کی بربادی اور حد سے زیادہ شور کی شکایات پر یہ اقدام کیے گئے ہیں۔

اس سے قبل ریاست میں سنہ 1984 میں اسی قسم کی پابندی عائد کی گئی تھی لیکن احتجاج کے بعد اسے ختم کر دیا گیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption کشمیر کے روایتی کھانے وازوان پر اچھا خاصا صرفہ آتا ہے

انڈیا کے دوسرے حصوں میں بھی شادی پر بہت خرچہ آتا ہے اور بہت سے لوگ کھانے، کپڑے اور تفریح کے سامان پر بےدریغ خرچہ کرتے ہیں۔

گذشتہ سال نومبر میں ریاست کرناٹک کے سابق وزیر اور تاجر جناردن ریڈی کی بیٹی برہمنی کی شادی کے تقریبات پانچ روز تک جاری رہی تھی اور ایک تخمینے کے مطابق اس پر تقریبا پانچ ارب روپے خرچ کیے گئے تھے۔

اس شادی کے دعوت نامے پر سونے کا پانی چڑھایا گیا تھا اور اس کے ساتھ ایل سی ڈی سکرین بھی نصب تھی اور صرف دعوت ناموں پر صرف کی جانے والی رقم ایک کروڑ روپے تھی۔

اس شادی پر لوگوں نے ناراضگی ظاہر کی تھی کیونکہ نوٹ بندی کے سبب اسی دوران انڈیا میں لوگوں کے لیے نقدی حاصل کرنا مشکل ہو رہا تھا۔

اس سے قبل سنہ 2004 میں انڈیا کے لکشمی متل کی بیٹی ونیشا متل کی شادی کے بھی چرچے تھے جس میں فوربز کے مطابق ایک ہزار مہمانوں کو فرانسیسی شہر ورسائے میں ہونے والی پارٹی کے لیے طیارے سے لے جایا گیا تھا اور یہ کہا گیا تھا کہ شادی پر سات کروڑ 40 لاکھ ڈالر خرچ ہوئے تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں