کم جونگ نام کا قتل،دو خواتین پر فرد جرم عائد کر دی گئی

Image caption دونوں خواتین کو ملائیشیا کے دارالحکومت میں پولیس کے خصوصی دستوں کی حفاظت میں عدالت میں لایا گیا

ملائیشیا میں حکام کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا کے حکمراں کم جونگ ان کے سوتیلے بھائی کم جونگ نام کی ہلاکت ميں ملوث دو خواتین پر ان کے قتل کی فرد جرم عائد کر دی گئی ہے۔

ویتنام سے تعلق رکھنے والی 28 سالہ ڈوان تھی ہاونگ اور انڈونیشیا کی 25 سالہ سیتیی ایسیاہ نے مبینہ طور پر 13 فروری کو کوالالمپور کے ہوائی اڈے پر کم جونگ نام کے چہرے پر ایک اعصاب شکن کیمیکل لگا دیا تھا جس سے ان کی موت ہو گئی تھی۔

ان دونوں خواتین کو ملائیشیا کے دارالحکومت میں پولیس کے خصوصی دستوں کی حفاظت میں عدالت میں لایا گیا۔

ملائیشیا کے اٹارنی جنرل محمد اپندی علی کے مطابق اگر یہ دونوں قصوروار پائی گئیں تو انھیں موت کی سزا بھی سنائی جا سکتی ہے۔

عدالت میں جب انھیں الزام پڑھ کر سنائے گئے تو ڈوان تھی ہیونگ نے کہا کہ ’میں الزامات سمجھتی ہوں لیکن میں قصوروار نہیں ہوں۔‘

کم جونگ نام شمالی کوریا کی حکومت کے ناقد تھے اور عام خیال یہی ہے کہ شمالی کوریا اس حملے کے لیے ذمہ دار ہے تاہم وہ اس الزام سے انکار کرتا ہے۔

دو ملزمان 13 اپریل کو دوبارہ عدالت میں پیش ہوں گی جب استغاثہ ان کے خلاف عدالتِ عالیہ میں مشترکہ طور پر مقدمہ چلانے کی درخواست کرے گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption جونگ نام کی ہلاکت اعصاب شکن زہریلے مادے سے کیے جانے والے حملے کے بعد 15 سے 20 منٹ کے اندر ہوئی تھی

اس قتل کے سلسلے میں ملائیشیا نے جن دس مشتبہ افراد کی شناخت کی ہے ان میں سے بعض کا تعلق کوالالمپور میں شمالی کوریا کے سفارت خانے سے ہے جبکہ ایک کا تعلق ملائیشیئن ایئر لائنز سے ہے۔

جنوبی کوریا کا کہنا ہے کہ اس میں کم از کم چار شمالی کوریا کے جاسوس ملوث ہوسکتے ہیں۔

حکام کے مطابق کم جونگ نام کی ہلاکت اعصاب شکن زہریلے مادے سے کیے جانے والے حملے کے بعد 15 سے 20 منٹ کے اندر ہوئی تھی۔

خیال رہے کہ وی ایکس ایک غیر معمولی تباہ کن کیمیائی ہتھیار ہے اور اس کا ایک قطرہ بھی انسانی جلد پر گرنے سے انسان مر سکتا ہے۔ یہ کیمیکل جلد کے راستے انسانی جسم میں داخل ہو کر نظامِ اعصاب کو تباہ کر دیتا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں