انڈیا میں لڑکی کی ’قربانی‘ پر تین افراد گرفتار

KARNATAKA POLICE تصویر کے کاپی رائٹ KARNATAKA POLICE
Image caption اس خبر کے پھیلتے ہی اس لڑکی کے بہن اور بھائی کے گھر کے باہر لوگ جمع ہوگئے

انڈیا کی جنوبی ریاست کرناٹک میں پولیس نے ایک دس سالہ لڑکی کی 'قربانی' کے الزام میں تین افراد کو گرفتار کیا ہے۔

پولیس نے بی بی سی ہندی کو بتایا کہ لڑکی کو ایک فالج زدہ شخص کے ’علاج‘ کے لیے ایک ’جادوگر‘ کی ہدایت پر قتل کیا گیا۔

اس شخص کے بھائی اور بہن کو لڑکی کو اغوا اور قتل کرنے کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا ہے۔

پولیس کے مطابق مبینہ جادوگر کا کہنا ہے کہ ان کے بھائی پر ’کالے جادو‘ کا اثر زائل کرنے کا صرف یہی ایک طریقہ تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ لڑکی کو اغوا میں مدد کرنے کے الزام میں ایک 17 سالہ لڑکے کو بھی گرفتار کیا گیا ہے۔

سینیئر پولیس آفسر بی رامیش نے بی بی سی ہندی کے نامہ نگار عمران قریشی کو بتایا: ’اس جرم پر اکسانے میں کچھ اور لوگ بھی ملوث ہیں۔ ہم تمام زاویوں سے تفتیش کر رہتے ہیں۔ چنانچہ مزید گرفتاریاں خارج ازامکان نہیں ہیں۔‘

یہ قتل اس وقت منظرعام پر آیا جب رہائشیوں کو ایک بیگ میں لڑکی کی لاش ملی۔ انھیں کچھ اور چیزیں بھی ملی جن کے بارے میں پولیس کا یقین ہے کہ وہ 'کالے جادو' کے لیے استعمال کی گئی تھیں۔

اس خبر کے پھیلتے ہی اس لڑکی کے بہن اور بھائی کے گھر کے باہر لوگ جمع ہوگئے اور پتھر پھینکنا شروع کر دیے۔ تاہم پولیس نے طاقت کا استعمال کرتے ہوئے انھیں منتشر کر دیا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں