لکھنؤ میں طویل جھڑپ کے بعد ایک مشتبہ شدت پسند ہلاک

اتر پردیش تصویر کے کاپی رائٹ ASHUTOSH TRIPATHY

انڈیا کی ریاست اترپردیش میں دارالحکومت لکھنؤ میں پولیس نے ایک مشتبہ شدت پسند کو طویل جھڑپ کے بعد ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ مرنے والے شدت پسند کا نام سیف اللہ تھا اور وہ بھوپال میں مسافر ٹرین میں ہونے والے دھماکے کا منصوبہ ساز تھا۔

پولیس کے مطابق سیف اللہ کو پکڑنے کے لیے انسداد دہشت گردی سکواڈ نے لکھنؤ کے علاقے ٹھاكرگنج میں منگل کی دوپہر کو کارروائی شروع کی تھی۔

یہ جھڑپ 12 گھنٹے تک جاری رہی۔ پولیس نے دو مشتبہ شدت پسندوں کے ایک مکان میں موجود ہونے کا خدشہ ظاہر کیا تھا لیکن جھڑپ ختم ہونے کے بعد ایک شخص کی لاش ملی ہے۔

پولیس اور انسداد دہشت گردی فورس کی مشترکہ کارروائی کے دوران مکان کی چھت میں سوراخ کر کے کیمرے سے اندر کی سرگرمیوں کی معلومات حاصل کیں۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والے شخص کے شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ سے روابط کے بارے میں تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ VIVEK TRIPATHI
Image caption ٹی وی مناظر میں ایک مکان کے کے گرد مسلح پولیس اور کمانڈوز کو دیکھا جا سکتا ہے