اترپردیش میں بی جے پی جبکہ پنجاب میں کانگریس کو اکثریت

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption نریندر مودی نے اترپردیش میں اپنی پارٹی کی انتخابی مہم میں مرکزی کردار ادا کیا تھا

انڈیا میں پانچ ریاستوں کے اسمبلی انتخابات میں ڈالے گئے ووٹوں کی گنتی کا عمل ابھی جاری ہے اور تازہ نتائج کے مطابق بی جے پی نے ریاست اترپردیش، اتراکھنڈ میں جبکہ کانگریس نے پنجاب میں اکثریت حاصل کر لی ہے۔

سب کی نظریں انڈیا کی سب سے بڑی ریاست اترپردیش کے نتائج پر ہیں جہاں ابتدائی رجحانات کے مطابق بی جے پی 234 سیٹیں جیت چکی ہے اور تقریبا 75 نششستوں پر اسے برتری حاصل ہے۔

اس طرح 403 رکنی اسبملی میں بی جے پی نے اکثریت حاصل کر لی ہے۔

انڈیا: ریاستی انتخابات کے نتائج کا دن

مودی اکھلیش اور راہل سے بڑے’یوتھ آئیکون'

ریاست اتراکھنڈ میں بھی بی جے پی نے 47 نششستوں پر کامیابی حاصل کر کے اکثریت حاصل کر لی ہے۔ 70 رکنی اسمبلی میں اسے دس مزید سیٹوں پر سبقت حاصل ہے۔

ریاست پنجاب میں کانگریس کو جیت حاصل ہوئی ہے جہاں وہ 117 رکنی اسمبلی میں سے 70 جیت چکی اور 10 پر اسے برتری حاصل ہے۔

منی پور میں کانگریس اور بی جے پی میں سخت مقابلہ ہے جہاں کانگریس نے 21 سیٹیں جبکہ بی جے پی نے 18 سیٹیں جیتی ہیں۔ کانگریس کو چار جبکہ بی جے پی کو 3 نشستوں پر سبقت حاصل ہے۔

گوا میں کانگریس کو بی جے پی پر سبقت حاصل ہے لیکن وہاں معلق اسبملی کے امکانات زیادہ ہیں۔ کانگریس نے 14 سیٹیں جبکہ بی جے پی 12 سیٹیں جیتی ہیں جبکہ کانگریس کو ایک اور بی جے پی کو دو پر سبقت حاصل ہے۔

الیکشن کمیشن کے رجحانات کے مطابق یوپی اور اتراکھنڈ میں بی جے پی دو تہائی اکثریت حاصل کر سکتی ہے۔

اترپردیش (کل نشستیں 403)

پارٹی سبقت جیت
بی جے پی 75 234
سماجوادی + کانگریس 14 41
بی ایس پی 06 14
دیگر 13 05

یو پی میں سماج وادی پارٹی اور کانگریس کا اتحاد دوسرے نمبر پر ہے جبکہ بی ایس پی تیسرے نمبر ہے۔

2012 میں سماج وادی پارٹی نے 224 سیٹیں حاصل کی تھیں جبکہ بی ایس پی کو 80 سیٹیں ملی تھی اور بی جے پی 47 سیٹوں کے ساتھ تیسرے نمبر پر رہی تھی جبکہ کانگریس صرف 28 سیٹیں ہی جیت سکی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption نامہ نگاروں کے مطابق ذات پات اور مذہب میں منقسم ریاست اترپردیش میں وعدے اہمیت کے حامل ہیں

اتر پردیش کی سابق وزیر اعلیٰ اور بی ایس پی کی رہنما مایاوتی نے ایک پریس کانفرنس میں ووٹنگ کے دوران مشینوں کی خرابی کا الزام لگاتے ہوئے دوبارہ انتخابات کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ پہلے انھیں یقین نہیں آیا تھا لیکن اس بار کے نتائج کو دیکھ کر وہ یہ کہہ سکتی ہیں کہ ووٹنگ مشینوں کے ساتھ چھیڑ چھاڑ ہوئی ہے۔

انھوں نے امریکہ کا حوالہ دیتے ہوئے بیلٹ پیپر پر پھر سے انتخابات کرائے جانے کا مطالبہ کیا ہے۔

خیال رہے کہ وزیر ا‏عظم مودی کی پارٹی بی جے پی نے یو پی میں سماج وادی پارٹی اور سابق وزیر اعلیٰ مایاوتی کی زیرِ قیادت بہوجن سماج پارٹی کے خلاف زبردست انتخابی مہم چلائی تھی۔

نریندر مودی نے اپنی پارٹی کی انتخابی مہم میں مرکزی کردار ادا کیا تھا اور انھوں نے مہم کے دوران ریاست میں ترقی کے ساتھ بدعنوانی کو ختم کرنے کا وعدہ بھی کیا۔

نامہ نگاروں کے مطابق ذات پات اور مذہب میں منقسم اس ریاست میں وعدے اہمیت کے حامل ہیں۔

پنجاب (کل نشستیں 117)

پارٹی سبقت جیت
اکالی دل + بی جے پی 00 17
کانگریس 04 73
عام آدمی پارٹی 00 20
دیگر 00 2

پنجاب میں 10 سال سے حکمراں اکالی بی جے پی اتحاد ابتدائی رجحانات میں شکست کھاتا نظر آ رہا ہے. یہاں کانگریس کو سبقت حاصل ہے۔ اکالی بی جے پی اتحاد دوسرے مقام پر ہے جبکہ جب ریاست میں پہلی بار الیکشن میں حصہ لینے والی عام آدمی پارٹی تیسرے نمبر پر ہے.

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

انتخابی رجحانات کے مطابق 117 نشستوں میں سے کانگریس نے اب تک 31 نشستیں جیت لی ہیں اور 46 سیٹوں پر وہ آگے ہے جبکہ اکالی دل نے اب تک 2 نشستیں جیتی ہیں اور 12 نشستوں پر آگے چل رہی ہے اور اس کی اتحادی بی جے پی نے بھی دو سیٹیں جیتی ہیں اور وہ ایک پر آگے ہے.

عام آدمی پارٹی 12 نشستیں جیت چکی ہے اور 9 سیٹوں پر اسے سبقت حاصل ہے۔

سنہ 2012 میں صوبے میں کانگریس نے 46 نشستیں، شرومنی اکالی دل اور بی جے پی نے 56 نشستیں جیتی تھیں جبکہ تین نشستوں پر دیگر امیدوار کامیاب ہوئے تھے۔

اترا کھنڈ (کل نشستیں70)

پارٹی سبقت جیت
بی جے پی 07 50
کانگریس 0 11
دیگر 02 0

اس ریاست کی اسمبلی کی کل 70 نشستیں ہیں۔

ابتدائی رجحانات میں اس ریاست میں بی جے پی حکمران پارٹی کانگریس سے بہت آگے ہے. بی جے پی نے سات نشستیں جیت لی ہیں اور 49 پر وہ آگے ہے جبکہ کانگریس نے تین سیٹیں جیتی ہیں اور وہ نو نشستوں پر آگے چل رہی ہے.

کانگریس کے وزیر اعلی ہریش راوت دو نشستوں پر الیکشن لڑ رہے تھے اور دونوں ہی جگہ انھیں شکست ہوئی ہے۔

سنہ 2012 میں بی جے پی کو 31 سیٹیں ملی تھی، جبکہ کانگریس نے 32 پر کامیابی حاصل کی تھی.

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption بی جے پی نے ریاست میں زبردست انتخابی مہم چلائی تھی

گوا (کل نشستیں 40)

پارٹی سبقت جیت
بی جے پی 01 12
کانگریس 3 14
دیگر 1 9

گوا میں بی جے پی اور کانگریس کے درمیان سخت مقابلہ جاری ہے.

ریاستی اسمبلی کی کل 40 سیٹوں میں سے بی جے پی نو نشستیں جیت چکی ہے اور دو سیٹوں پر آگے ہیں جبکہ کانگریس بھی نو نشستیں جیت چکی ہے اور چار پر وہ آگے چل رہی ہے.

2012 میں ہونے والے انتخابات میں بی جے پی نے 21، جے يو پی نے 2، کانگریس نے 9، مهاراشٹروادی گوماتك پارٹی نے 3 اور دیگر نے 5 نشستیں جیتی تھیں.

منی پور (کل نشستیں 60)

پارٹی سبقت جیت
بی جے پی 02 19
کانگریس 02 23
دیگر 01 9

منی پور سے حاصل کردہ انتخابی رجحانات کے مطابق یہاں بھی کانگریس اور بی جے پی کے درمیان سخت مقابلہ ہے.

منی پور میں کانگریس 12 سیٹیں جیت چکی ہیں اور سات سیٹوں پر آگے ہیں جبکہ بی جے پی 10 سیٹیں جیت چکی ہے اور 7 پر آگے ہے.

صوبے سے پہلی بار اروم شرمیلا کی پارٹی بھی انتخابی میدان میں ہے.

2012 میں ہوئے اسمبلی انتخابات میں کل 60 سیٹوں میں سے کانگریس نے 42 سیٹوں پر جیت درج کی تھی.

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں