دو انڈین شہری پاکستان میں ’لاپتہ‘

دہلی تصویر کے کاپی رائٹ AFP

انڈیا کے دارالحکومت دہلی میں واقع خواجہ نظام الدین اولیا کی درگاہ سے تعلق رکھنے والے دو صوفی علما کے مبینہ طور پر پاکستان میں لاپتہ ہونے کے بارے میں تاحال کوئی نئی معلومات سامنے نہیں آئی ہیں۔

جمعرات کو انڈیا کے ذرائع ابلاغ کے مطابق انڈیا کے شہر دہلی میں واقع خواجہ نظام الدین اولیا کی درگاہ سے تعلق رکھنے والے دو صوفی علما مبینہ طور پر پاکستان سے لاپتہ ہو گئے ہیں۔

پاکستان کے وزارتِ خارجہ کے ترجمان نفیس ذکریا نے جمعرات کو بی بی سی سے بات کرتے ہوئے اس بات کی تصدیق کی کہ ان کو انڈین ہائی کمیشن کی جانب سے دو بھارتی شہریوں کی گمشدگی کے حوالے سے درخواست موصول ہوئی ہے جس کو مزید کاروائی کے لیے متعلقہ اداروں کو بھجوا دیا گیا ہے۔

تاہم اس حوالے سے وزارتِ خارجہ کی طرف سے تا حال کوئی تازہ بیان سامنے نہیں آیا ہے۔

انڈین ذرائع ابلاغ میں آنے والی خبروں کے مطابق اور آصف نظامی اور ان کے بھتیجے ناظم نظامی بدھ کے روز لاہور میں داتا دربار کی زیارت کے بعد سے لاپتہ ہو گئے تھے۔

ان کی گمشدگی کے حوالے سے ان کے خاندان کے افراد کو اس وقت تشویش ہوئی جب ان کو ٹیلی فون پر رابطہ نہ کیا جا سکا۔ ان کے خاندان نے اسلام آباد میں انڈین ہائی کمیشن کو ان کی ممکنہ گمشدگی سے آگاہ کیا۔

لاہور میں داتا دربار کے ایک منتظم نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ دونوں انڈین صوفی علما نے دو روز قبل داتا دربار کی زیارت کی تھی۔

نام نہ بتانے کی شرط پر انھوں نے بی بی سی کو بتایا کہ انھوں نے دونوں علما کو دربار میں دیکھا تھا۔ تاہم دربار سے جانے کے بعد وہ کہاں گئے اس کا ان کو علم نہیں۔ تاہم دربار کے ایک اور منتظم کا کہنا تھا کہ یہ دونوں بھارتی علما گذشتہ برس بھی کئی بار داتا دربار میں زیارت کے لیے آتے رہے ہیں اور وہ ان کی مہمان نوازی بھی کرتے رہے ہیں۔

بی بی سی نے لاہور میں ایئر پورٹ پر فیڈرل انویسٹیگیشن ایجنسی یعنی ایف آئی اے کے امیگریشن کے دفتر سے رابطہ کیا تو وہاں موجود اہلکار نے دونوں بھارتی شہریوں کے ایئر پورٹ سے جہاز میں سوار ہونے کے حوالے سے لاعلمی کا اظہار کیا تھا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں