انڈيا: سختگیر ہندو نظریات کے حامل رہنما یو پی کے وزیر اعلی

تصویر کے کاپی رائٹ Manoj singh
Image caption يوگی کے خلاف قتل کرنے کی کوشش، فساد برپاکرنے، سماجی ہم آہنگی کو نقصان پہنچانے، دو فرقوں کے درمیان نفرت پھیلانے، مزار کو نقصان پہنچانے جیسے الزامات کے تحت تین مقدمات درج ہیں۔

انڈیا کی حکمراں جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی نے سختگیر ہندو نظریات کے حامل رہنما یوگی ادتیہ ناتھ کو ریاست اترپردیش کا وزیر اعلی بنانے فیصلہ کیا ہے۔

پارٹی نے حالیہ اسبملی انتخابات میں زبردست کامیابی حاصل کی تھی جس کے بعد سے قیاس آرائیاں جاری تھیں کہ آخر یو پی کا وزیر اعلی کون ہوگا۔

پارٹی کا کہنا ہے کہ اس کی جماعت کے منتخب ہونے والے ارکان اسمبلی نے متفقہ طور پر یوگی کو وزیر اعلی منتخب کرنے کا فیصلہ کیا۔

دلی میں پارٹی رہنماؤں کی ایک طویل میٹنگ کے بعد اس کا اعلان پارٹی کے سینیئر رہنما اور مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو نے کیا۔

انھوں نے کہا: 'جب یوگی جی کا نام لیا گيا تو سبھی ارکان نے متفقہ طور پر اس کی حمایت کی۔ اس لیے میں نے اعلان کیا ہے کہ انھیں اسمبلی کا لیڈر منتخب کیا گیا ہے۔ اتوار کو سوا دو بجے ان کی حلف برداری کی تقریب ہوگي جس میں وزیر اعظم نریندر مودی سمیت پارٹی کے سبھی سرکردہ رہنما شرکت کریں گے۔'

وینکیا نائیڈو کا کہنا تھا کہ 'یوگی آدتیہ ناتھ کے کہنے پر ریاستی صدر کیشو کمار موریا اور لکھنؤ کے میئر دینش شرما کو نائب وزیر اعلی کا عہدہ سونپا گيا ہے۔ '

تصویر کے کاپی رائٹ Manoj singh
Image caption سیاست میں یوگی آدتیہ ناتھ کی شناخت ایک فائر برانڈ ہندو رہنما کی رہی ہے

انھوں نے کہا کہ کابینہ کا انتخاب خود وزیراعلی حلف لینے کے بعد کریں گے۔

یوگی آدتیہ ناتھ فی الحال شہر گورکھپور سے پانچویں بار رکن پارلیمان ہیں۔ وہ گورکھ پور کے معروف مندر گورکھ ناتھ مٹھ کے مہنتھ یعنی مندر کے سربراہ ہیں۔

لیکن سیاست میں یوگی آدتیہ ناتھ کی شناخت ایک فائر برانڈ ہندو رہنما کی رہی ہے۔ وہ مسلمانوں کے تعلق سے اپنے متنازع بیانات کے لیے مشہور ہیں جن کی ایک طویل فہرست ہے۔ وہ سخت گیر ہندو نظریاتی تنظیم آر ایس ایس کے نظریات سے کافی قریب مانے جاتے ہیں۔

گذشتہ برس مارچ میں گورکھناتھ مندر میں ہونے والے ایک اجلاس میں، جہاں آر ایس ایس کے سرکردہ رہنما بھی موجود تھے، یوگی آدتیہ ناتھ کو یو پی کا وزیر اعلی بنانے کا عہد کیا گیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ facebook
Image caption یوگی آدتیہ ناتھ کی ہندو یوا واہنی نامی ایک ملیشیا بھی ہے جسے انھوں نے خود قائم کیا تھا

یوگی آدتیہ ناتھ کی ہندو یوا واہنی نامی ایک ملیشیا بھی ہے جسے انھوں نے خود قائم کیا تھا۔ ان کے مطابق یہ ملیشیا 'ثقافتی تنظیم' ہے جو ہندو مخالف، ملک مخالف اور ماؤنواز مخالف سرگرمیوں' کو کنٹرول کرتی ہے۔

یوگی کا تعلق پہاڑی ریاست اتراکھنڈ کے گڑھوال کے ایک گاؤں سے بتایا جاتا ہے۔ ان کا اصل نام اجے سنگھ بشٹ ہے لیکن یوگی آدتیہ ناتھ بننے کے پہلے کی زندگی کے بارے میں لوگوں کو زیادہ کچھ نہیں معلوم ہے

وہ هیم وتی نندن بہوگنا یونیورسٹی سے سائنس کے گریجویٹ ہیں اور ان کے خاندان کے لوگ ٹرانسپورٹ بزنس میں ہیں۔

یوگی آدتیہ ناتھ کی سیاست تشدد سے پر رہی ہے اور خود ان کے خلاف بھی قتل کرنے کی کوشش، فساد برپاکرنے، سماجی ہم آہنگی کو نقصان پہنچانے، دو فرقوں کے درمیان نفرت پھیلانے، مزار کو نقصان پہنچانے جیسے الزامات کے تحت تین مقدمات درج ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں