سخت گیر ہندو رہنما یوگی اترپردیش کے 21 ویں وزیر اعلیٰ بن گئے

یوگی آدتیہ ناتھ تصویر کے کاپی رائٹ AFP/GETTY IMAGES
Image caption کل شام جب سے یوگی آدتیہ ناتھ کے نام کا اعلان کیا گیا اس کے بعد سے مبارکباد کا سلسلہ رکنے کا نام نہیں لے رہا تھا

انڈیا میں سخت گیر ہندو نظریات کے حامل رہنما یوگی آدتیہ ناتھ نے اتوار کو اترپردیش کے نئے وزیر اعلیٰ کا حلف اٹھا لیا ہے۔

اس طرح یوگی اتر پردیش کے 21 ویں وزیر اعلیٰ بن گئے ہیں۔ وہ پانچ بار رکن پارلیمان رہ چکے ہیں۔ انتخابات کے دوران ان کے حامیوں نے ’دہلی میں مودی، یوپی میں یوگی‘ کا نعرہ دیا تھا۔

ان کے علاوہ کیشو پرساد موریہ اور دنیش شرما کو نائب وزرا اعلیٰ کے عہدے کا حلف اٹھایا۔ خیال رہے کہ ریاست میں پہلی بار دو نائب وزرا اعلیٰ ہوں گے۔

٭ یوگی آدتیہ ناتھ کے بعض متنازع بیانات

٭ اترپردیش میں بی جے پی، پنجاب میں کانگریس کی کامیابی

ان کے علاوہ 22 وزیر کابینہ اور 24 ریاستی وزرا نے بھی حلف لیا ہے۔

لکھنؤ کے کانشی رام میموریئل گارڈن میں ہونے والی حلف برداری کی تقریب کے دوران وزیر اعظم نریندر مودی، کئی ریاستوں کے وزراء اعلی اور بی جے پی کے سینیئر لیڈرز موجود تھے۔

خیال رہے کہ وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ اور دونوں نائب وزرا اعلی ریاستی اسمبلی یا قانون ساز کونسل کے رکن نہیں ہیں۔

ماہرین کا خیال ہے کہ ان تینوں کے ذریعہ بی جے پی نے راجپوت (یوگی)، برہمن (دنیش) اور او بی سی (کیشو) ووٹ بینک کو یکجا کرنے کی کوشش کی ہے۔

محسن رضا کابینہ میں شامل ہونے والے واحد مسلم لیڈر ہیں۔ مبصرین کا خیال ہے کہ یوپی میں اقلیتی بہبود کے شعبے اور وقف بورڈ سمیت کئی ایسے ادارے ہیں جن کے سربراہ عام طور پر مسلمان ہی ہوتے ہیں اور یہ ذمہ داری انھیں سونپی جا سکتی ہے۔

خیال رہے کہ ابھی قلمدان کا اعلان نہیں کیا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption یوگی آدتیہ ناتھ کے ساتھ دو نائب وزراء اعلی بھی ہوں گے

یوگی کابینہ میں دو سابق کرکٹرز کو جگہ ملی ہے۔ ان میں سے ایک چیتن چوہان ہیں جو بین الاقوامی کرکٹ کھیل چکے ہیں جبکہ محسن رضا فرسٹ کلاس کرکٹ کھیل چکے ہیں۔

کابینہ میں چھ خواتین کو جگہ دی گئی ہے جن میں ریتا بہوگنا جوشی، گلاب دیوی، سواتی سنگھ، انوپما جیسوال، سنگیتا بلون اور ارچنا پانڈے شامل ہیں۔

مغربی اتر پردیش کو ترجیح دی گئی ہے۔ بھوپیندر چودھری، سریش رانا، سری کانت شرما، لکشمی نارائن چودھری اور اتل گرگ کو وزیر بنایا گیا ہے۔

بلدیو اولاكھ کو بھی ریاسی وزیر کا حلف دلایا گیا ہے۔ وہ یوگی کابینہ میں اکلوتے سکھ وزیر ہیں اور رام پور سے جیت کر لکھنؤ پہنچے ہیں۔

سریش رانا بھی وزیر بنے ہیں۔ انھیں وزیر مملکت (آزاد چارج) بنایا گیا ہے۔ سنہ 2013 میں مظفر نگر میں ہونے والے فسادات کے تعلق سے ان پر الزامات لگے تھے۔

حلف برداری کی تقریب کے بعد ریاست کے سابق وزیر اعلی ملائم سنگھ یادو نے وزیر اعظم نریندر مودی سے گرمجوشی سے ملاقات کی جبکہ مودی نے اکھلیش یادو سے بھی مصافحہ کیا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں