کابل میں نیٹو کے قافلے پر حملہ، آٹھ افراد ہلاک

نیٹو قافلہ (فائل فوٹو) تصویر کے کاپی رائٹ AFP/Getty Images
Image caption نیٹو افواج کے ایک قافلے کی پرانی تصویر

افغانستان کے دارالحکومت کابل میں نیٹو کی سربراہی والے ایک قافلے پر بظاہر خود کش حملہ ہوا ہے جس میں متعدد افراد ہلاک اور زخمی ہوئے ہیں۔

شعبۂ صحت کے حکام کا کہنا ہے کہ حملے میں کم از کم آٹھ افراد ہلاک اور 25 سے زیادہ افراد زخمی ہوئے ہیں۔ ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔

حملے میں نیٹو کی بکتر بند گاڑیوں کے قافلے کو نشانہ بنایا گیا ہے جسے فوجیوں کی نقل و حمل کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔

٭ افغان طالبان کا ’آپریشن منصوری‘ کے آغاز کا اعلان

٭ افغان فوجی اڈے پر حملہ، 130 سے زائد ہلاک

ابھی تک اس بات کی اطلاعات نہیں ملیں کہ آيا اس حملے میں کوئی غیرملکی فوجی بھی ہلاک ہوا ہے۔

یہ دھماکہ امریکی سفارت خانے سے تھوڑے ہی فاصلے پر شہر کے ایک بھیڑ والے علاقے میں ہوا۔

حملے میں نیٹو کی ایک گاڑی کو شدید نقصان پہنچا ہے جبکہ وہاں سے گزرنے والی بہت سی دوسری کاریں بھی دھماکے کی زد میں آئی ہیں۔

یہ حملہ طالبان کی جانب سے دی جانے والی دھمکی کے بعد ہوا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ وہ غیر ملکی افواج کو موسم بہار کے اپنے حملوں میں نشانہ بنائيں گے۔

طالبان کی جانب سے ان کارروائیوں کو گذشتہ برس امریکی ڈرون حملے میں مارے جانے والے طالبان رہنما ملا منصوری کی نسبت سے'آپریشن منصوری' کا نام دیا گیا ہے۔

اس سے قبل گذشتہ ماہ افغانستان کے شمالی صوبے بلخ میں افغان فوجی اڈے پر ہونے والے ایک حملے میں 130 سے زائد فوجی مارے گئے تھے اور حکام کے مطابق طالبان نے حملے کی ذمہ داری قبول کی تھی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں