انڈیا کے سابق وزیر نے 82 سال کی عمر میں 12ویں کا امتحان پاس کر لیا

چوٹالہ تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption او پی چوٹالہ سیاسی جماعت انڈین نیشنل لوک دل کے رہنما ہیں اور سابق ڈپٹی وزیراعظم دیوی لال کے بیٹے ہیں

انڈیا کے ایک سابق وزیر نے 82 سال کی عمر میں 12ویں کا امتحان پاس کر لیا ہے۔

ہریانہ کی ریاست کے چار بار وزیر اعلیٰ کے عہدے پر فائز رہنے والے اوم پرکاس چوٹالہ بدعنوانی کے جرم میں جیل کی سزا کاٹ رہے ہیں اور انھوں نے دہلی کی تہاڑ جیل میں 12ویں کا امتحان دیا تھا۔

ان کے بیٹے ابھے چوٹالہ کا کہنا ہے کہ ان کے والد نے 'جیل میں گزارے گئے وقت کو بامعنی بنانے کا فیصلہ کیا تھا۔'

او پی چوٹالہ کو اساتذہ کی بھرتیوں میں بدعنوانی کا مجرم قرار دیا گیا تھا۔

ابھے چوٹالہ نے اخبار انڈین ایکسپریس کو بتایا کہ ان کے والد 'روزانہ جیل کی لائبریری جاتے ہیں۔'

انھوں نے بتایا کہ 'وہ روزانہ اخبارات اور کتابیں پڑھتے ہیں۔ وہ جیل کے عملے سے اپنی پسندیدہ کتابوں کے بندوبست کرنے کا کہتے ہیں۔ وہ دنیا بھر کے عظیم سیاست دانوں کے بارے میں کتابیں پڑھتے ہیں۔'

خیال رہے کہ او پی چوٹالہ اور 54 دیگر افراد کو سنہ 1999 اور 2000 کے درمیان 3206 اساتذہ کی بھرتیوں کے لیے دستاویز میں جعل سازی کرنے کا مجرم ٹھہرایا گیا تھا۔

پراسیکیوٹرز کا کہنا تھا کہ ملازمتوں کے لیے رشوت دینے والوں کو قابل امیدواروں پر ترجیح دی گئی تھی۔

او پی چوٹالہ سیاسی جماعت انڈین نیشنل لوک دل کے رہنما ہیں اور سابق ڈپٹی وزیراعظم دیوی لال کے بیٹے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں