انڈیا: اترا کھنڈ میں بس ندی میں گرنے سے 21 زائرین ہلاک

اتراکھنڈ تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption اترا کھنڈ ہندو زائرین کے لیے بہت اہمیت کا حامل ہے اور ہر سال یہاں لاکھوں زائرین آتے ہیں

انڈیا کی شمالی ریاست اتراکھنڈ میں ایک بس کے ایک ندی میں گر جانے سے بس میں سوار کم از کم 21 زائرین ہلاک ہو گئے ہیں۔

یہ واقعہ منگل کی شام دھراسو شہر میں پیش آیا جب ڈرائیور نے بس پر اپنا کنٹرول کھو دیا۔

اس واقعے میں سات افراد زخمی بھی ہوئے ہیں اور ریاست کے وزیر اعلی تریویندر راوت نے بتایا ہے کہ زخمیوں کا مقامی ہسپتال میں علاج کیا جا رہا ہے۔

انڈیا کی شمالی ریاست مقدس مقامات کے لیے معروف ہے اور ہر سال لاکھوں سیاح وہاں جاتے ہیں۔

٭ شملہ میں مسافر بس دریا میں گرنے سے درجنوں ہلاکتوں کا خدشہ

٭ اترا کھنڈ: سیلاب سے ہلاکتیں، زبردست تباہی

بس حادثے کے شکار افراد گنگوتری سے واپس اپنی ریاست مدھیہ پردیش جا رہے تھے۔ گنگوتری کو ہندو مذہب میں اہم مقام حاصل ہے اور یہ وہ جگہ ہے جہاں سے دریائے گنگا نکلتی ہے۔

ریاست کے ایک سینیئر سرکاری اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ ابھی تک ندی سے 17 لاشیں نکالی جا چکی ہیں۔

انھوں نے کہا: 'امدادی ٹیم باقی ماندہ لاش کو نکالنے میں منہمک ہیں۔'

تصویر کے کاپی رائٹ AFP/Getty Images
Image caption ملک کے طول عرض سے لوگ اتراکھنڈ کے مختلف مقامات پر زیارت کے لیے آتے ہیں

مدھیہ پردیش کے وزیر اعلی شو راج سنگھ چوہان نے اپنے ٹویٹ میں اس واقعے کو 'تکلیف دہ' قرار دیا ہے اور انھوں نے مرنے والوں کے اہل خانہ کو دو دو لاکھ روپے معاوضے کا اعلان کیا ہے۔

اترا کھنڈ میں سنہ 2013 میں آنے والے سیلاب میں تقریبا ایک ہزار افراد ہلاک ہو گئے تھے اور بڑے پیمانے پر املاک کو نقصان پہنچا تھا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں