چین: شنگھائی ایئرپورٹ پر کوکین سے بنے سوٹ کیس پکڑے گئے

چین کوکین بیگ تصویر کے کاپی رائٹ Police hand out

چین میں حکام نے شنگھائی ایئرپورٹ پر ایک خاتون کو گرفتار کیا ہے جو کوکین سے بنے ہوئے دو سوٹ کیسوں کو ملک میں سمگل کرنے کی کوشش کر رہی تھی۔

اطلاعات کے مطابق جب کسٹم حکام کو لاطینی امریکہ کے ایک ملک سے آنے والی ایک خاتون کےسوٹ کیسوں کے بارے میں شک گزارا تو انھوں نے سوٹ کیس کی مالک خاتون کو اسے خالی کرنے کے لیے کہا لیکن کسٹم حکام کو اس میں کچھ نہ ملا۔

اس سوٹ کیس کا ایکسرے کرنے پر معلوم ہوا کہ ان کا رنگ عام سے زیادہ سیاہی مائل تھا۔ سوٹ کیس کو خالی کیے جانے کے باوجود اس کا وزن عام سوٹ کیسوں سے زیادہ تھا۔ مزید ٹیسٹ کرنے پر معلوم ہوا کہ دونوں سوٹ کیسوں کو دس کلو کوکین سے بنایا گیا تھا۔

حکام نے لاطینی امریکہ کے ملک سے آنے والی اس خاتون کو رواں سال فروری میں گرفتار کیا تھا لیکن پولیس نے اس کی اطلاعات اب جاری کی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

ماضی میں ایسے واقعات ہوئے ہیں جب سمگلروں نے منشیات کو کسٹم حکام سے چھپانے کے لیے نئے نئے طریقے استعمال کیے لیکن یہ پہلا موقع ہے کہ کوکین کے مواد سے بنائےگئے سوٹ کیسوں کو کسٹم حکام کے سامنے سے گذارنے کی کوشش کی گئی ہے۔

اس سے پہلے چین میں ایسے واقعات پیش آئے ہیں جب ایک شخص نے اپنی ٹانگ کو کوکین کے سفوف سے لپیٹ رکھا تھا۔ گذشتہ ماہ ایک چینی جوڑے کو اس وقت گرفتار کیا تھا جب وہ کوکین کو انگور سے بنی شراب میں گھول کر ملک میں لانے کی کوشش کر رہے تھے۔

یورپ میں بھی ایسے واقعات سامنے آ چکے ہیں جب سمگلروں نے کوکین کو سریش کی مدد سے اسے سخت میٹریل میں تبدیل کر کے اسے سمگل کرنے کی کوشش کی ۔

چین میں کوکین بہت ہی کم دستیاب ہے اور اسے سمگل کرنے کی کوشش کرنے والی خاتون کو اس کی بھاری قیمت چکانی ہو گی۔

چین کے قانون کے مطابق اگر کسی شخص پر 50 گرام سے زیادہ کی کوکین سمگل کرنے کا الزام ثابت ہو جائے تو اسے موت کی سزا دی جاتی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں