انڈیا: لڑکیوں کی روحانی تربیت کا قدیم مرکز

انڈیا تصویر کے کاپی رائٹ PAROMITA CHATTERJEE

انڈیا کے مقدس شہر واراناسی میں لڑکیوں کے لیے بنایا گیا ایک روایتی بورڈنگ سکول اپنی انوکھی تاریخ کے وجہ سے مشہور ہے۔

ماں آنندمائی کنیاپیتھ لڑکیوں کے لیے ایک مخصوص ادارہ ہے جہاں انڈیا بھر سے کمسن لڑکیاں پڑھائی اور روحانی تربیت کے لیے آتی ہیں۔

یہ سکول گروکُل کی طرز پر قائم ہے جہاں طلبہ کی رہائش ان کے اساتذہ کے قریب ہوتی ہے۔

فوٹوگرافر پرومیتا چیٹرجی نے اس سکول کا دورہ کیا اور اس آشرم کی تصویر کشی کی۔

انڈیا تصویر کے کاپی رائٹ PAROMITA CHATTERJEE

69 سال سے قائم یہ سکول واراناسی میں قائم ہے جسے ہندومت کی جنم بھومی تصور کیا جاتا ہے۔ ہر سال ہزاروں زائرین اس شہر کا رخ کرتے ہیں تاکہ وہ مقدس دریا گنگا میں ڈبکی لگا سکیں۔

انڈیا تصویر کے کاپی رائٹ PAROMITA CHATTERJEE

یہ سکول روحانی رہنما ماں آنندمائی نے قائم کیا تھا جو کہ بنگلہ دیش میں پیدا ہوئی تھیں اور انھوں نے انڈیا بھر کا روحانی سفر کیا تھا۔

انڈیا تصویر کے کاپی رائٹ PAROMITA CHATTERJEE

اس سکول میں ایک عام دن صبح چار بجے شروع ہوتا ہے اور دن بھر بچیوں کو دین اور دنیا دونوں کی تعلیم دی جاتی ہے۔

انڈیا تصویر کے کاپی رائٹ PAROMITA CHATTERJEE

بچیوں کو اس سکول میں داخلہ پانچ برس کی عمر سے دیا جاتا ہے اور وہ بالغ ہونے تک آشرم میں رہتی ہیں۔ صبح دس بجے سے لے کر شام چار بجے تک ان کو تعلیم دی جاتی ہے۔

انڈیا تصویر کے کاپی رائٹ PAROMITA CHATTERJEE

سکول میں طالبات کو ہندومت کی مقدس کتاب جیسے ویداس کے اسباق دن میں دو بار پڑھائے جاتے ہیں۔ اس کے علاوہ انھیں سنسکرت زبان کی گرامر، انگریزی، ہندی، ریاضی، تاریخ، جغرافیہ، معاشیات اور عمرانیات کی بھی تعلیم دی جاتی ہے۔

اس تصویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ لڑکیاں دن کی پہلی کلاس سے پہلے اپنی میزوں کو ٹھیک کر رہی ہیں۔

انڈیا تصویر کے کاپی رائٹ PAROMITA CHATTERJEE

دن میں ان طالبات کو دو گھنٹے کھیلنے کے لیے بھی ملتے ہیں۔

سکول کی ویب سائٹ کے مطابق ان کے ہاں 'موسیقی سکھانے، گھریلو کام کاج، سلائی، کڑھائی، کھانا پکانا اور دیگر امور خانہ داری سکھانے کی سہولیات بھی ہیں۔'

انڈیا تصویر کے کاپی رائٹ PAROMITA CHATTERJEE

سکول میں پڑھنے والی طالبات ہاسٹل میں رہتی ہیں۔

انڈیا تصویر کے کاپی رائٹ PAROMITA CHATTERJEE

سکول میں یونیفارم کی بہت سختی ہے اور جیسے جیسے طالبات کی عمریں بڑھتی جاتی ہیں وہ سکول یونیفارم کی جگہ سفید ساڑھی لینا شروع کر دیتی ہیں۔ سکول میں طالبات کے لیے چھوٹے تراشے ہوئے بال رکھنا ضروری ہے۔

انڈیا تصویر کے کاپی رائٹ PAROMITA CHATTERJEE

سکول کے اساتذہ کے مطابق جب یہ طالبات سکول سے فارغ ہو جاتی ہیں تو ان کو باہر کی دنیا میں جا کر کوئی بھی پیشہ اختیار کرنے کی اجازت ہوتی ہے۔

انڈیا تصویر کے کاپی رائٹ PAROMITA CHATTERJEE

لیکن ضروری نہیں کہ ہر کوئی اپنا یہ گھر چھوڑ کے چلا جائے کیونکہ کچھ خواتین تعلیم کے بعد اسی آشرم میں زندگی گزارنا پسند کرتی ہیں۔

تصاویر: پرومیتا چیٹرجی

متعلقہ عنوانات