نریندر مودی کو گلدستے نہیں کتابیں چاہیں

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

سیاستدان شاید گلدستوں کے عادی ہوں، لیکن انڈیا کے وزیراعظم نریندر مودی نے اپنی ریاستی حکومتوں سے کہا ہے کہ وہ جب بھی دورہ کریں تو انھیں گلدستے نہ پیش کیے جائیں۔

انڈیا ڈاٹ کام کے مطابق رواں ہفتے وزارت برائے داخلہ امور نے تمام ریاستوں سے کہا ہے کہ ’وزیراعظم کو انڈیا کے اندر دوروں پر گلدستے پیش نہ کیے جائیں۔‘

وزارت داخلہ کے مطابق وزیراعظم چاہتے ہیں کہ انھیں ’ایک پھول کے ساتھ ہاتھ سے بنا رومال یا کتاب پیش کی جائے۔‘

یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ نریندر مودی نے دورہ کرنے والوں کے لیے گلدستوں کی بجائے کتابوں کی وکلات کی ہو۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

جون میں ایک ریڈیو پرگرام میں نریندر مودی نے کہا تھا کہ ’گلدستوں کی زندگی بہت مختصر ہوتی ہے۔ آپ انھیں کچھ وقت کے لیے اپنے ہاتھوں میں لینے کے بعد چھوڑ دیتے ہیں، لیکن جب آپ کتاب دیتے ہیں تو وہ پورے گھر، خاندان کا حصہ بن جاتی ہے۔‘

وزیراعظم کی جانب سے انڈیا کی ہاتھ سے بنے کپڑوں کی صنعت جسے کھاڈی کے نام سے جانا جاتا ہے کی تشہیر مہاتما گاندھی کی ملک میں برطانوی صنعتوں کی مخلافت کی طرف اشارہ کرتی ہے۔

ہاتھ سے بنے کپڑوں کی حمایت کا مقصد انڈیا کو اپنے پیروں پر کھڑا کرنا ہے اور انڈیا میں اس صنعت کی تشہیر اور تحفظ اب بھی قوم پرستی کے طور پر کیا جاتا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں