لہسن، سبزی ہے یا مصالحہ؟

لہسن تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

انڈیا میں لہسن سبزی ہے یا مصالحہ کے حوالے سے ایک تنازع شروع ہو گیا ہے اور اب یہ معاملہ عدالت تک پہنچ گیا ہے۔

راجستھان ہائی کورٹ نے ریاستی حکومت سے پوچھا ہے کہ لہسن سبزی ہے یا مصالحہ ہے۔

دراصل راجستھان حکومت کے سنہ 2016 کے نئے قانون کے مطابق لہسن اناج منڈی میں فروخت کیا جانا چاہیے لیکن اس سے پہلے یہ سبزی منڈی میں فروخت کیا جاتا تھا۔

لہسن فروشوں کے مطابق بچولیے (مڈل مین) سبزیوں کے بازار میں فروخت کرنے پر چھ فیصد کمیشن دیتے ہیں لیکن اناج منڈی میں صرف دو فیصد کمیشن دیتے ہیں اور یہی لہسن فروخت کرنے والے افراد کی پریشانی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ VIBHURAJ/BBC

تنازع کیا ہے؟

اس تنازعے پر جودھ پور میں آلو، پیاز اور لہسن بیچنے والے تاجروں کی ایسوسی ایشن نے راجستھان ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی ہے۔ اس درخواست میں انھوں نے پوچھا ہے کہ وہ لہسن کو اناج منڈی میں کیوں فروخت کریں؟

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے آلو، پیاز اور لہسن بیچنے والے تاجروں کی ایسوسی ایشن کے صدر بنسی لال سانكھلا نے بتایا ’ ہم گذشتہ 40 سال سے لہسن کو سبزی منڈی میں فروخت کرتے آئے ہیں۔ آج تک کوئی دقت نہیں ہوئی ہے۔ یہ ضرور ہے کہ سبزی منڈی اب چھوٹی پڑ گئی لیکن حکومت کو اسے بڑا کرنے کے بارے میں سوچنا چاہیے اور تاجروں کو پریشان کرنے کے بارے میں نہیں۔‘

راجستھان حکومت کے مطابق سبزی منڈی میں جگہ کی کمی کی وجہ سے حکومت نے لہسن کو اناج منڈی میں فروخت کرنے کے لیے سنہ 2016 کے قانون میں تبدیلی کی ہے۔ سنہ 2016 میں لہسن کی پیداوار بھرپور رہی تھی۔

اس حوالے سے بی بی سی نے راجستھان حکومت کا موقف جاننے کی کوشش کی لیکن کسی سرکاری اہلکار یا ترجمان سے اس بارے میں بات نہیں ہو سکی۔

جب بات چل ہی نکلی ہے تو لہسن کے بارے میں آپ کو چند دلچسپ معلومات فراہم کرتے ہیں جو شاید آپ کو معلوم نہیں ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

تحقیق کیا کہتی ہے؟

امریکی محکمۂ زراعت کی تحقیق کے مطابق لہسن کا استعمال تقریباً 5000 سال سے کیا جا رہا ہے۔ تاریخ میں اس کا ثبوت ہے کہ ببیلونیا کے لوگ 4500 سال پہلے اس کا استعمال کرتے تھے۔

اقوام متحدہ کی سنہ 2017 میں جاری ہونے والی رپورٹ کے مطابق لہسن کی سب سے زیادہ کاشت چین میں ہوتی ہے۔ لہسن کی کل پیداوارکا 66 فیصد چین میں کاشت کیا جاتا ہے۔

لہسن کی پیداوار میں جنوبی افریقہ اور انڈیا دوسرے اور تیسرے نمبر پر ہیں جبکہ امریکہ کا نمبر چوتھا ہے۔

اس رپورٹ میں 1700 سال پرانے ہندوستانی سنسکرت کے مضامین کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ جب وشنو نے اسروں کے راجا راہو کا سر کاٹا تو اس کے خون سے لہسن آیا۔

اس رپورٹ میں لہسن کو سبزی قرار دیا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ iStock

ماہرین کیا کہتے ہیں؟

انڈین زرعی ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کے ویجیٹیبل سائنسدان ڈاکٹر پریتم کالیا کے مطابق لہسن بنیادی طور پر سبزیوں میں شمار ہوتا ہے لیکن یہ مصالحے کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔ اسے پراسس کر کے مصالحے کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔

ڈاکٹر پریتم کالیا کے مطابق ’لہسن کی فروخت کے بارے میں کوئی تنازع نہیں ہونا چاہیے کیونکہ اس کو ہمیشہ سبزیوں کی منڈی میں فروخت کیا گیا ہے، یہ اناج منڈی میں فروخت نہیں کیا جاتا، یہ ہمیشہ سبزیوں کے ساتھ سبزیوں کے طور پر کھایا جاتا ہے. چاہے آپ اس سے چٹنی بنائیں یا اسے کسی سبزی میں ڈالیں، یہ سبزیوں کے طور پر کاشت کیا جاتا ہے۔‘

لہسن جو زیر زمین اُگتا ہے عام طور پر اکتوبر اور نومبرکے مہینوں میں بویا جاتا ہے اور اس کی فصل اپریل تک تیار ہوتی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں