بھارت میں فٹنس کا بڑھتا رجحان

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption بھارتی خواتیں بالی وڈ اداکارہ بپاشا باسو کی طرح نظر آنے کی خواہش مند نظر آتی ہیں

ممبئی میں اتوار کو 14 ویں سالانہ میراتھن ہوئی اس ریس میں دنیا بھر سے ہزاروں لوگوں نے شرکت کی۔

ورلي میں سمندر کے کنارے سے شروع ہو کر کاروباری مرکز نریمن پوائنٹ پر ختم ہونے والی اس میراتھن میں شامل ہونے کے لیے ہر طبقے اور عمر کے لوگوں نے جوش و خروش کے ساتھ تیاری کی دن شروع ہوتے ہی لوگ صحیح جگہ حاصل کرنے کے لیے کار اور سائیکل سے وہاں پہنچے۔

بھارت میں فٹنس ایک اہم کاروبار کے طور پر ابھر رہا ہے اور میراتھن کی بڑھتی ہوئی مقبولیت اس کا ثبوت ہے۔

میں نے تین سال پہلے نیو یارک شہر میں زمبا شروع کیا رقص اور ورزش کے میل جول سے بنایا گیا یہ سٹائل ان لوگوں کے لیے بہترین ہے، جن میں توانائی کافی زیادہ ہوتی ہے۔

گزشتہ ایک سال سے میں ہفتے میں چار بار زمبا کی کلاس میں جا رہی ہوں اور جس دن میں نہیں جا پاتی، اس دن کافی بے چینی محسوس کرتی ہوں اسی وجہ سے جب حال میں میں چند ماہ کے لیے بھارت آئی تھی، تو اصل میں میں اپنی معمول زندگی کے حوالے سے بہت پریشان ہو گئی تھی۔

خوشگوار تجربہ

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption کھلے میدانوں میں دوڑنے جاور بائک چلانے کا چلن بھی عام ہوتا جا رہا ہے

گزشتہ ماہ ممبئی میں اپنی پہلی زمبا کلاس میں 10 منٹ پہلے پہنچ گئی

ایک نئے ڈائریکٹر کے ساتھ پہلی کلاس میں پہلی ڈیٹ سے بھی زیادہ گھبراہٹ ہوتی ہے اور یہی خیال آتا ہے کہ کیا آپ اسے کر پائیں گے؟ کیا یہ بہت زیادہ مشکل ہو جائے گا؟ کیا آپ گھوم پائیں گے؟ کیا کلاس کا وقت آپ کے لیے مناسب ہوگا؟

لیکن کلاس ختم ہونے کے بعد میں بہت خوش تھی اور میں نے محسوس کیا کہ ممبئی میں میری پہلی زمبا کلاس کا تجربہ بہترین تھا۔ اگلے دن ایک دوسرے سٹوڈیو میں مجھے ایسا ہی تجربہ ہوا ڈائریکٹر بہترین تھا اور زيادہ تر طالب علم بھی متاثر کن تھے۔

گزشتہ کچھ ہفتوں کے دوران جتنے بھی ٹرینرز سے میری ملاقات ہوئی، ان کی بالی وڈ رقص کا بیک گراؤنڈ تھا۔

ہم نے شادیوں میں یہ رقص کیا ہے اور اس میں زمبا کلاس کے مقابلے کافی زیادہ اچھل كود ہوتی ہے اور بات صرف زمبا کی نہیں ہے بھارت نے فٹنس کو جس طرح دیکھنا شروع کیا ہے، اس کے لیے بالی وڈ کا شکریہ ادا کیا جانا چاہیے۔

فٹنس کے لیے بڑھتی ہوئی بیداری

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption لوگوں میں صحت کے لیے بیداری بڑھ رہی ہے اور صرف دبلے پن کی جگہ اب صحت مند زندگی پر توجہ دی جا رہی ہے۔

مجھے دہلی میں 1990 کی دہائی کے اپنے پہلے دن یاد ہیں جب مشکل سے ہی کوئی جِم دکھائی دیتے تھے۔ یہاں تک کہ فلمی ستارے بھی بھاری بھرکم ہوا کرتے تھے۔ یہاں دلچسپ بات یہ ہے کہ اب شہری لوگوں میں فٹنس کے بارے میں بیداری بڑھ رہی ہے۔

اس سمت میں آگے بڑھنے کے خطرے بھی ہیں اور نوجوان خواتین کی ایک نسل میں مناسِب خوراک نہ لینے سے متعلق مسائل پیدا ہو سکتے ہیں۔ اور بالی وڈ اداکارہ بپاشا باسو کی طرح نظر آنے کی خواہش ایک مسئلہ بھی ہے مگر فی الحال بھرے ہوئے مختلف جم سے نکلتے لوگوں کو بڑی تعداد یہ ظاہر کرتی ہے کہ لوگوں میں صحت کے لیے بیداری بڑھ رہی ہے اور صرف دبلے پن کی جگہ اب صحت مند زندگی پر توجہ دی جا رہی ہے۔

اب تمام بڑے شہروں میں بے شمار جم اور سٹوڈیو ہیں، جو صحت اور گلیمر کی سطح پر مختلف طبقوں کی ضروریات کو پورا کر رہے ہیں۔

فٹنس کاروبار

ان فٹنس سینٹروں میں کک باکسنگ، سپننگ، ایروبِکس، پِلاٹے اور مِکس مارشل آرٹس کی کلاسیں ہوتی ہیں۔ کھلے میدانوں میں دوڑنا اور بائیک چلانے کا چلن بھی ہے ہر کسی کے لیے کچھ نہ کچھ ہے۔ ریباک کا انتہائی کامیاب فٹنس سینٹر بھارت میں آ چکا ہے اور وہ ملک بھر میں اپنے جم کھول رہا ہے۔

اسی بارے میں