بدھا کا ٹیٹو، برطانوی سیاح سری لنکا سے بے دخل

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption برطانوی سیاح کا کہنا ہے کہ وہ خود بدھ مت کی ماننے والی ہیں

سری لنکا کے حکام نے ایک برطانوی سیاح خاتون کو اپنے بازو پر بدھ مذہب کے بانی گوتم بدھ کا ٹیٹو بنوانے پر ملک بدر کرنے کا حکم دیا ہے۔

پیر کو بھارت سے سری لنکا کے دارالحکومت کولمبو کے ہوائی اڈے پر پہنچنے والی نیومی مائیکل کولمین کے دائیں بازو پر کنول کے پھول پر بیٹھے ہوئے بدھ کا ٹیٹو دیکھے جانے پر انھیں فوری طور پر گرفتار کر لیا گیا۔

حکام کا کہنا ہے کہ ان کے اس عمل سے دوسروں کے مذہبی جذبات مجروح ہوئے ہیں۔

برطانوی خاتون کو واپس بھیجے جانے تک تارکین وطن کے حراستی مرکز میں رکھا گیا ہے۔

سری لنکا میں بدھ مذہب کے پیروکاروں کی اکثریت ہے۔ یہاں بدھ کی تصاویر کے حوالے سے خاص طور پر کافی حساس رویہ اپنایا جاتا رہا ہے۔

کولمبو میں برطانوی ہائی کمیشن سے رابطہ کرنے پر انھوں نے بی بی سی کو بتایا: ’ہم اس واقعے پر نظر رکھے ہوئے ہیں اور ضروری مدد فراہم کر رہے ہیں۔‘

گذشتہ سال مارچ میں بھی سری لنکا میں ایسا ہی ایک معاملہ سامنے آیا تھا جب ایک برطانوی سیاح کو کولمبو کے بین الاقوامی ہوائی اڈے میں داخل ہونے سے روک دیا گیا تھا۔

برطانوی سیاح کا کہنا ہے کہ وہ اس صورتِ حال پر حیران ہیں، اور وہ حکام سے مسلسل اصرار کرتی رہیں کہ وہ خود بدھ مت کی ماننے والی ہیں اور بدھ کے احترام کے پیشِ نظر ہی انھوں نے وہ ٹیٹو بنوایا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سری لنکا میں بدھ کی تصاویر کے حوالے سے خاص طور پر بہت حساس رویہ اپنایا جاتا رہا ہے

ان کے بقول ہوائی اڈے پر سب کچھ ٹھیک تھا تاہم باہر آنے پر ایک ٹیکسی ڈرائیور نے انھیں بتایا کہ ان کے بازوں پر بنا بدھ کا ٹیٹو انتہائی سنگین مسئلہ ہے۔ پھر سادہ کپڑوں میں ملبوس ایک پولیس اہلکار انھیں پولیس سٹیشن لے گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ سری لنکن حکام نے ان کا موقف جاننے کی کوشش نہیں کی اور انھیں ملک بدر کرنے کا حکم سنا دیا۔

برطانوی سیاح کا کہنا تھا کہ انھیں سری لنکا کے بعد مالدیپ جانا تھا اس لیے انھوں نے سری لنکن حکام سے کہا کہ وہ وہاں چلی جاتی ہیں، تاہم حکام نے بتایا کہ انھیں برطانیہ ہی ڈی پورٹ کیا جائے گا۔

دو سال پہلے سری لنکا میں بدھ کی مورتی کو چومنے کے الزام میں تین فرانسیسی سیاحوں کو جیل بھیج دیا گیا تھا۔

برطانوی محکمۂ سیاحت سری لنکا سیر کے لیے جانے والوں کو بدھ مذہب سے منسلک مسائل کے بارے میں ہمیشہ آگاہ کرتا رہا ہے۔ سیاحوں کو بدھ کی مورتی کے سامنے تصاویر کھنچوانے سے بھی منع کیا جاتا رہا ہے۔

حالیہ برسوں میں کچھ کٹر بدھ گروہوں کے راہبوں کی طرف سے مسلمانوں اور عیسائیوں کے خلاف پر تشدد حملوں میں اضافہ ہوا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سیاحوں کو بدھ کی مورتی کے سامنے تصاویر کھنچوانے سے بھی منع کیا جاتا رہا ہے

اسی بارے میں