بھارت:انتخابات کا آٹھواں مرحلہ بدھ کو

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption امیٹھی میں عام آدمی پارٹی کے لیڈر کمار وشواس اور بی جے پی کی لیڈر اور سابق اداکارہ سمرتی ایرانی راہول گاندھی کو چیلنج کر رہی ہیں

انڈیا میں پارلیمانی انتخابات کا طویل عمل آخرکار اپنے اختتام کو پہنچ رہا ہے اور پولنگ کے آٹھویں مرحلے میں بدھ کو 64 حلقوں میں ووٹ ڈالے جائیں گے۔

ان میں کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی کا انتخابی حلقہ امیٹھی بھی شامل ہے جہاں پیر کی شام انتخابی مہم ختم ہونے سے ذرا پہلے بی جے پی کے لیڈر نریندر مودی نے ایک بڑے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اب ماں بیٹے کی حکومت کا وقت ختم ہو رہا ہے اور یہ کہ انھوں نے لگاتار دس سال اقتدار میں رہنے کے باوجود اس علاقے کی ترقی کو مسلسل نظرانداز کیا ہے۔

امیٹھی کے حلقے میں زبردست مقابلہ

بھارتی انتخابات کا ساتواں مرحلہ

انڈیا میں عام طور پر بڑے سیاسی رہنما ایک دوسرے کے انتخابی حلقوں سے دور رہتے ہیں اور یہ پہلی مرتبہ تھا کہ حزب اختلاف کے کسی بڑے لیڈر نے امیٹھی کی انتخابی مہم میں حصہ لیا ہو۔

بدھ کی پولنگ کے بعد نویں اور آخری مرحلے میں بارہ مئی کو ووٹ ڈالے جائیں گے۔

سب سے دلچسپ مقابلہ امیٹھی میں ہی ہونے کی توقع ہے جہاں سے عام آدمی پارٹی کے لیڈر کمار وشواس اور بی جے پی کی لیڈر اور سابق اداکارہ سمرتی ایرانی راہول گاندھی کو چیلنج کر رہی ہیں۔راہول گاندھی اس حلقے سے دو مرتبہ منتخب ہو چکے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ PTI
Image caption کچھ ماہرین پرینکا گاندھی کو کانگریس کی آخری امید کہتے ہیں

اس کے علاوہ اترپردیش کے ہی سلطانپور حلقے سے سنجے گاندھی کے بیٹے اور راہول کے چچازاد بھائی ورون گاندھی بھی بی جے پی کے ٹکٹ پر الیکشن لڑ رہے ہیں۔

بہار کے حاجی پور حلقے پر بھی نگاہیں ٹکی رہیں گی جہاں سے سابق وفاقی وزیر رام ولاس پاسوان میدان میں ہیں۔

پاسوان لوک جن شکتی پارٹی کے لیڈر ہیں اور انھوں نے گجرات میں دو ہزار دو کے فسادات کے خلاف اپنی ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے اٹل بہاری واجپئی کی حکومت سے استعفیٰ دے دیا تھا لیکن دس سال بعد دوبارہ بی جے پی سے اتحاد کر لیا ہے۔

بدھ کو جن سات ریاستوں میں پولنگ ہوگی ان میں اتراکھنڈ، ہماچل پردیش، بہار، اترپردیش، آندھر پردیش (سیماندھرا)، مغربی بنگال اور جموں و کشمیر شامل ہیں۔ اس کے بعد بہار، اترپردیش اور مغربی بنگال کے علاوہ باقی ملک میں پولنگ کا عمل مکمل ہو جائے گا۔

کشمیر کے دو حلقوں بارہمولہ اور لداخ میں ووٹنگ ہوگی۔ ساتویں مرحلے میں سرینگر میں ووٹ ڈالے گئِے تھے لیکن علیحدگی پسندوں کی جانب سے بائیکاٹ کی اپیل کی وجہ سے پولنگ کی شرح کافی کم رہی تھی۔

انتخابات کے نتائج کا اعلان سولہ مئی کو کیا جائے گا۔

اسی بارے میں