بھارت: آتشزدگی میں مرنے والوں کی تعداد 16

تصویر کے کاپی رائٹ dhananjay
Image caption دور سے آگ کے شعلے بلند ہوتے دیکھے جا سکتے ہیں

بھارت کی جنوبی ریاست آندھرا پردیش کے مشرقی ضلعے گوداوری میں واقع ایک ریفائنری کی پائپ لائن پھٹنے اور پھر آتشزدگی کے نتیجے میں مرنے والوں کی تعداد 16 ہو گئی ہے۔

اس حادثے میں 15 افراد جمعے کو ہی ہلاک ہو گئے تھے جبکہ ایک بچی کی موت سنیچر کو ہسپتال میں ہو گئی۔

پولیس نے مزید ہلاکتوں کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ چھ افراد سنگین طور پر جلے ہوئے ہیں اور ان کا ہسپتال میں علاج جاری ہے۔

حادثے میں دو درجن سے زیادہ افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں جبکہ 50 سے زیادہ مکانات جل گئے ہیں۔

مشرقی گوداوری ضلعے کے ایس پی نے بھارتی خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی کو فون پر بتایا: ’کاکینانڈا کے ایک نجی ہسپتال میں جس بچی کا علاج جاری تھا وہ آج صبح زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسی اور اس طرح مرنے والوں کی کل تعداد 16 ہو گئی ہے۔‘

انھوں نے بتایا کہ مختلف ہسپتالوں میں مزید 20 لوگوں کا علاج جاری ہے جن میں سے کم از کم چھ کی حالت نازک ہے کیونکہ وہ 80 فی صد جل چکے ہیں۔

گیل یعنی گیس اتھارٹی آف انڈیا لمیٹیڈ کی یہ ریفائنری آندھرا پردیش کے ساحلی علاقے میں نگرم گاؤں میں واقع ہے۔ یہ حادثہ گیس پائپ لائن پر دباؤ کے بعد گیس رسنے سے شروع ہوا۔

پولیس نے پہلے کہا تھا کہ گیس کے اخراج سے علاقے میں گیس پھیل گئي تھی اور جب ایک چائے والے نے اپنا سٹوو جلایا تو دھماکے کے ساتھ آگ لگ گئی جس نے علاقے کو اپنی زد میں لے لیا۔ حادثے کے بعد آس پاس کے دیہات کو خالی کرایا گیا تاہم آگ نے فوری طور پر قرب و جوار کے متعدد مکانات کو اپنی زد میں لے لیا۔

گیل کی گیس پائپ لائن سے تقریبا 200 میٹر کے رقبہ میں آگ کے اونچے شعلے بلند ہونے لگے تاہم اب ان پر قابو پا لیا گیا ہے۔

اسی بارے میں