اوباما بھارت میں: سری فورٹ میں نوجوانوں سے خطاب

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption پیر کو براک اوباما اور نریندر مودی دونوں رہنماؤں نے باہمی رشتوں میں اضافے کو سراہا

امریکی صدر براک اوباما اپنے بھارتی دورے کے آخری دن نئی دہلی میں نوجوانوں سے ایک ٹاؤن ہال انداز کی میٹنگ کرنے والے ہیں۔

اوباما کا یہ تین روزہ دورہ امریکہ اور بھارت جیسے دو بڑے اتحادیوں کے درمیان معاشی رشتوں کو فروغ دینے کے لیے تھا۔

پیر کو ایک مشترکہ تجارتی فورم سے خطاب کرتے ہوئے صدر اوباما نے کہا کہ امریکہ اور بھارت کے اقتصادی رشتوں میں بہت سے ایسے امکانات ہیں جن پر ابھی تک نظر نہیں ڈالی گئی ہے۔

اس سے قبل انھوں نے بھارت کے یوم جمہوریہ کی تقریب میں بھی شرکت کی جس میں بھارت اپنی فوجی قوت کا مظاہرہ کرتا ہے۔

اتوار کو دورے کے پہلے دن صدر اوباما اور بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے دونوں ممالک کے درمیان تعطل کے شکار سول جوہری معاہدے میں پیش رفت کا اعلان کیا۔

یہ معاہد گذشتہ بھارتی حکومت کے ساتھ سنہ 2008 میں ہوا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption صدر اوباما پیر کو ہونے والی بھارتی یوم جمہوریہ کی تقریب میں مہمانِ خصوصی تھے

منگل کو براک اوباما دہلی کے سری فورٹ آڈیٹوریم میں منتخب سامعین سے خطاب کریں گے اور ان کے سوالوں کے جواب دیں گے۔

اطلاعات کے مطابق براک اوباما اس موقعے پر معیشت اور جمہوری اقدار پر اظہار خیال کریں گے۔

پیر کو براک اوباما اور نریندر مودی دونوں رہنماؤں نے باہمی رشتوں میں اضافے کو سراہا جبکہ بھارتی وزیر اعظم نے کہا کہ دونوں کے درمیان مضبوط رشتے ’تمام لوگوں کے لیے اس دنیا کو بہتر جگہ بنائیں گے۔‘

اوباما نے کہا کہ گذشتہ چند برسوں میں دونوں ملکوں کے درمیان تجارت میں 60 فی صد ا‌ضافہ ہوا ہے جو ہر طرح سے جیت ہے۔

انھوں نے کہا کہ ہم صحیح سمت میں بڑھ رہے ہیں۔ لیکن ہم سب جانتے ہیں کہ امریکہ بھارت معاشی رشتوں میں بہت سے غیر استعمال شدہ امکانات بھی موجود ہیں۔

صدر اوباما کا بھارتی دورہ سعودی عرب کے شاہ عبداللہ کے انتقال کے سبب مختصر ہو گیا ہے جس کا مطلب یہ ہے کہ وہ اور ان کی اہلیہ اب اس دورے میں تاریخی تاج محل نہیں دیکھ سکیں گے۔

اسی بارے میں