اترپردیش میں ٹرین کے حادثے میں 30 ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ PTI
Image caption فوری طور پر حادثے کی وجہ معلوم نہیں ہو سکی ہے۔

بھارت کی ریاست اتر پردیش میں ایک مسافر ٹرین کے حادثے میں کم از کم 30 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

یہ حادثہ جمعے کو رائے بریلی کے قریب پیش آیا جب دہرادون سے وارانسی جانے والی ٹرین کی تین بوگیاں پٹڑی سے اتر گئیں۔

حادثے کی اطلاع ملتے ہیں مقامی آبادی سے لوگ جائے حادثہ پر پہنچے اور امدادی کارکنوں کی آمد تک اپنی مدد آپ کے تحت زخمیوں کو ٹرین سے نکالا۔

خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی نے ناردرن ریلوے کے جنرل مینیجر اجے كتھيا کے حوالے کہا ہے کہ حادثے میں 30 افراد ہلاک ہوئے ہیں.

بھارتی ریلوے کے ڈویژنل کمرشل منیجر اشونی شری واستو نے کہا ہے کہ حادثے میں 40 کے قریب افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ جائے حادثہ پر امدادی کارروائیاں جاری ہیں اور ریلوے حکام کے مطابق شدید زخمی لوگوں کو لکھنؤ میڈیکل کالج کے ہسپتال میں داخل کروایا گیا ہے۔

فوری طور پر حادثے کی وجہ معلوم نہیں ہو سکی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption بھارت میں روزانہ دو کروڑ 30 لاکھ افراد ریل گاڑیوں پر سفر کرتے ہیں

بھارت میں ریل کے نظام کا شمار دنیا کے سب سے بڑے ریل نیٹ ورکس میں ہوتا ہے اور روزانہ دو کروڑ 30 لاکھ افراد ریل گاڑیوں پر سفر کرتے ہیں۔

ملک میں ریل کے حادثات عام ہیں جن میں بڑی تعداد میں لوگ ہلاک ہوتے ہیں۔

یہ رواں برس ملک میں ریل کا دوسرا بڑا حادثہ ہے۔ اس سے قبل فروری میں ریاست کرناٹک میں بھی ٹرین پٹڑی سے اترنے کے نتیجے میں 11 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

سنہ 2012 میں جاری کی جانے والی ایک سرکاری رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ بھارت میں ہر سال تقریباً 15 ہزار افراد مختلف حادثات میں ہلاک ہو جاتے ہیں۔

رپورٹ میں خراب حفاظتی معیار کی وجہ سے ہونے والی ان اموات کو ایک طرح کا قتل عام قرار دیا گیا تھا۔

اسی بارے میں