جدہ ایئر پورٹ پر ’جنسی زیادتی‘، ایران نے عمرہ پروازیں منسوخ کر دیں

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ’میں نے حج اور عمرہ آرگنائزیشن کو حکم دیا ہے کہ عمرہ کی تمام پروازیں اس وقت تک معطل کر دی جائیں جب تک مجرموں کو سزا نہیں دے دی جاتی‘

سعودی عرب میں دو ایرانی لڑکوں کے ساتھ مبینہ جنسی زیادتی کے بعد ایران نے عمرہ کے لیے جانے والی تمام پروازیں منسوخ کر دی ہیں۔

یہ اعلان ایران کے ثقافتی وزیر علی جنتی نے کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ پروازیں اس وقت بحال ہوں گی جب سعودی عرب مجرموں کو سزا دے گا۔

دو ایرانی نوجوانوں نے الزام عائد کیا ہے کہ مارچ کے مہینے میں عمرہ سے واپسی پر جدہ کے ہوائی اڈے پر سکیورٹی حکام نے ان کے ساتھ جنسی زیادتی کی تھی۔

یاد رہے کہ ایران اور سعودی عرب میں یمن کے بحران کے حوالے سے کشیدگی پائی جاتی ہے۔

ہفتے کے روز ایرانیوں نے تہران میں واقع سعودی سفارت خانے کے باہر مظاہرہ کیا اور ایرانی حکومت سے مطالبہ کیا کہ عمرہ کی پروازیں بند کر دی جائیں۔

پیر کے روز علی جنتی نے ریاستی ٹی وی سے بات کرتے ہوئے کہا: ’میں نے حج اور عمرہ آرگنائزیشن کو حکم دیا ہے کہ عمرہ کی تمام پروازیں اس وقت تک معطل کر دی جائیں جب تک مجرموں کو سزا نہیں دے دی جاتی۔‘

ان کا کہنا تھا: ’اس واقعے سے ایران کی عزت نفس مجروح ہوئی ہے۔ سعودی حکام نے وعدہ کیا ہے کہ حراست میں لیے گئے افراد کو سزا دی جائے گی لیکن ابھی تک کچھ نہیں کیا گیا۔‘

واضح رہے کہ ہر سال پانچ لاکھ ایرانی عمرہ کے لیے سعودی عرب جاتے ہیں۔

اسی بارے میں