خاتون کو اینٹ مارنے پر پولیس اہلکارگرفتار

Image caption یہ ویڈیو قریب سے گزرنے والے ایک شخص نے بنائی تھی جس کے منظر عام پر آنے کے بعد پولیس اہلکار کو معطل کر دیا گیا ہے

بھارت کے دارالحکومت نئی دہلی میں ایک ٹریفک پولیس اہلکار کو خاتون کو اینٹ سے مارنے کے مناظر ٹی وی چینلز پر دکھائے جانے کے بعد پولیس اہلکار کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

فوٹیج میں دیکھا جا سکتا ہے کہ خاتون کی جانب سے پولیس اہلکار کی موٹر بائیک پر اینٹ پھینکنے کے بعد اس اہلکار نے اینٹ خاتون کی پشت پر ماری۔

یہ ویڈیو قریب سے گزرنے والے ایک شخص نے بنائی تھی جس کے منظرِ عام پر آنے کے بعد پولیس اہلکار کو معطل کر دیا گیا ہے۔

خاتون کا جو اپنی دو بیٹیوں کو سکوٹر پر سکول سے گھر لے جا رہی تھیں کہنا ہے کہ یہ جھگڑا تب شروع ہوا جب پولیس اہلکار نے ان سے رشوت دینے کو کہا۔

انھوں نے بتایا کہ پولیس اہلکار نے انھیں روکا اور مبینہ طور پر ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی کرنے کے الزام میں ان سے 200 بھارتی روپے یعنی تین ڈالر بطور رشوت مانگے۔

خاتون کا کہنا ہے کہ جب انھوں نے رسید مانگی تو پولیس اہلکار نے دینے سے انکار کر دیا۔

اس ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ پہلے خاتون نے اینٹ پولیس اہلکار کی بائیک کی جانب پھینکی لیکن ان کی بیٹی نے این ڈی ٹی وی کو بتایا کہ پہلے پولیس اہلکار پر تشدد ہوئے تھے۔

انھوں نے مزید بتایا کہ ’ جب میری والدہ سکوٹر چلانے لگیں تو پولیس انکل نے سکوٹر کو دھکا دیا اور پتھر پھینکا، میری والدہ نے پتھر اٹھایا اور ان کی موٹر بائیک کی جانب پھینک دیا۔ انھوں نے میری والدہ کا ہاتھ موڑا اور اینٹ کے ساتھ مارا۔‘

دہلی کے پولیس کمیشن بی ایس باسی کا کہنا ہے کہ پولیس اہلکار کے خلاف فوجداری کا مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔

بی ایس باسی نے کہا کہ ’ ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ ہمیں افسوس ہے کہ یہ شرمناک عمل ایک ٹریفک پولیس اہلکار نے کیا ہے۔‘

اس واقع پر بھارت میں سخت غصہ پایا جاتا ہے اور بہت لوگ سوشل میڈیا پر پولیس اہلکار کو شدید تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں۔

اسی بارے میں