بھارت: امونیاگیس لیکیج سے چھ ہلاک، 200 زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ Thinkstock
Image caption گیس لیک میں ہلاکتوں میں اضافے کے خدشات ظاہر کیے جا رہے ہیں

بھارت کی مغربی ریاست پنجاب کے شہر لدھیانہ میں پولیس کا کہنا ہے کہ سنیچر کو ایک گیس ٹینکر سے گیس لیک ہونے سے کم از کم چھ افراد ہلاک اور تقریبا 200 زخمی ہو گئے ہیں۔

پولیس کے مطابق یہ واقعہ لدھیانہ سے تقریباً 25 کلو میٹر کے فاصلے پر دوراہا بائی پاس روڈ پر ایک نہر کے کنارے اس وقت پیش آیا جب امونیا گیس سے بھرا ایک ٹینکر ایک فلائی اوور سے ٹکرا کر وہیں پھنس گیا۔

سینيئر صحافی روبندر سنگھ روبن نے بی بی سی کو بتایا کہ ہلاک ہونے والوں میں بس ڈرائیور بھی شامل ہے۔

انھوں نے بتایا کہ بعض متاثرین کو انتہائی نگہداشت کے شعبے آئی سی یو میں رکھا گیا ہے اور ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔

بھارتی خبر رساں ایجنسی کے مطابق دوراہا پولیس سٹیشن کے ایس ایچ او رجنیش کمار سود نے بتایا کہ ہلاک ہونے واوں اور متاثرین کو لدھیانہ ہسپتال منتقل کر دیا گيا ہے۔

انھوں نے بتایا کہ مزید 100 افراد نے سانس لینے میں تکلیف کی شکایت کی ہے اور اس کی وجہ امونیا گیس کا سانس کے ساتھ اندر جانا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ جب ٹینکر سے گیس لیک ہونا شروع ہوئی تو دوراہا کے پاس کے رہائشی اپنے گھروں سے باہر نکل آئے۔

ایس ایچ او نے بتایا کہ متاثرین افراد کو دوراہا، کھننا اور لدھیانا کے مختلف ہسپتالوں میں داخل کیا گیا ہے۔

پولیس نے کہا کہ ٹرک پر ریاست گجرات کا نمبر درج تھا اور یہ لدھیانہ سے جا رہا تھا۔

مرنے والوں کی شناخت ابھی نہیں ہو سکی ہے۔

تقریبا 200 افراد کو لدھیانہ اور کھنہ کے مختلف ہسپتالوں میں داخل کرایا گیا۔ ان میں سے زیادہ تر کو ابتدائی علاج کے بعد رخصت دے دی گئی۔

بھٹنڈا اور لدووال سے قومی آفات سے ٹمٹنے والی اینڈ ڈی آر ایف کی دو ٹیمیں رات کو ہی جائے حادثہ پر پہنچ گئی تھیں۔

ٹرک کو جائے حادثہ سے ہٹا دیا لیا گیا ہے اور ڈاکٹروں کی ٹیمیں آس پاس کے علاقوں میں لوگوں کی صحت کی جانچ کر رہی ہیں۔

پولیس نے علاقے کی ناکہ بندی کر دی ہے۔

اسی بارے میں