افغانستان میں امریکی حملے میں القاعدہ کا کمانڈر ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption وزیر دفاع نے بتایا کہ القاعدہ کا کمانڈر السوڈانی افغان صوبے پکتیکا میں ہلاک ہوا ہے

امریکہ کے وزیر دفاع ایش کارٹر کا کہنا ہے کہ افغانستان میں ایک امریکی فضائی حملے میں شدت پسند تنظیم القاعدہ کا سینیئر کمانڈر مارا گیا۔

وزیر خارجہ نے بتایا کہ شدت پسند تنظیم القاعدہ کا کمانڈر ابو خلیل السوڈانی 11 جولائی کو فضائی حملے میں ہلاک ہوا ہے۔

افغانستان میں بم حملہ، 30 سے زائد ہلاک

افغانستان میں امن کے لیے بات چیت کرنا ’جائز‘ ہے: ملا عمر

ایش کارٹر نے بتایا کہ السوڈانی القاعدہ کی جانب سے ہونے والے خودکش حملوں کی منصوبہ بندی کرتے تھے اور وہ امریکہ پر ہونے والے حملوں کی منصوبہ بندی میں بھی شامل رہے تھے۔

ہلاک ہونے والے کمانڈر کو القاعدہ کے رہنما ایمن الظواہری کے قریبی ساتھیوں میں شمار کیا جاتا تھا اور امریکی محکمۂ دفاع کے مطابق وہ نیٹو، افغان اور پاکستانی افواج پر حملوں کی نگرانی بھی کرتے تھے۔

پینٹاگون سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ ’السوڈانی اُن تین شدت پسندوں میں سے ایک ہیں جو حملے میں مارے گئے۔ السوڈانی کی ہلاکت سے دنیا بھر میں القاعدہ کی کارروائیوں میں مزید کمی ہوگی۔‘

وزیر دفاع نے بتایا کہ القاعدہ کے کمانڈر کو افغان صوبے پکتیکا میں ہلاک کیا گیا ہے۔

افغانستان میں حالیہ کچھ ماہ کے دوران طالبان کی جانب سے حکومت اور غیر ملکیوں کے خلاف حملوں میں تیزی آئی ہے۔

لیکن رواں ماہ کے آغاز میں طالبان کمانڈر ملا عمر نے حکومت کے مذاکرات کے حق میں فتویٰ دیا تھا۔

حکام کا کہنا ہے کہ طالبان اور افغان حکومت کے درمیان ملاقات جولائی کے آخر میں ہوگی۔

اسی بارے میں