’منیٰ واقعے میں 464 ایرانی ہلاک ہوئے‘

تصویر کے کاپی رائٹ Saudi Civil Defence Directorate
Image caption لپتہ شہریوں کے زندہ حالت میں ملنے کی امید نہیں: ایران

ایران کا دعویٰ ہے کہ دورانِ حج منیٰ میں بھگدڑ میں اس کے 464 شہری ہلاک ہوئے ہیں۔

خیال رہے کہ اس سے قبل ایران کے ہلاک ہونے والے حجاج کی تعداد 140 سے زائد بتائی گئی تھی۔

’سعودی عرب معافی مانگے‘

ہلاک شدگان کی اصل تعداد پر تنازع

ایرانی حکام نے کہا ہے کہ انھیں اپنے لاپتہ شہریوں کے زندہ مل جانے کی کوئی امید نہیں ہے۔

ادھر سعودی حکام کی جانب سے جاری ہونے والے سرکاری اعدادوشمار کے مطابق 23 ستمبر کو پیش آنے والے منیٰ واقعے میں کل 769 حجاج ہلاک ہوئے۔

پاکستان اور چند اور ممالک کے مطابق سعودی حکام کی جانب سے ملنے والی فہرست میں کل 1100 افراد کے ہلاک ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption منٰی واقعے کے بعد ایران میں سعودی حکومت کے حلاف عوامی احتجاج بھی دیکھنے کو ملا

یہ مسلمانوں کے سالانہ طور پر ہونے والے سب سے بڑے مذہبی اجتماع میں گذشتہ 25 سال کے دوران پیش آنے والا سب سے بڑا سانحہ ہے۔

سعودی حکومت کو سکیورٹی انتظامات اور ہلاکتوں کی تعداد کم بتانے پر تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

ایران کے روحانی پیشوا آیت اللہ خامنہ ای نے مطالبہ کیا ہے کہ سعودی عرب اپنی ذمہ داری قبول کرے اور معافی مانگے۔

تاہم سعودی حکام نے اپنے ردِ عمل میں کہا ہے کہ ایران اس حادثے پر سیاست کر رہا ہے۔

سعودی عرب کے وزیرِ خارجہ عادل الجبير نے کہا کہ ایران سعودی عرب کے شاہ سلیمان کی طرف سے حادثے کی وجہ جاننے کے لیے شروع کی گئی تحقیقات کے نتائج کا انتظار کرے۔

اسی بارے میں