بہار میں انتخابی نتائج کے حصص بازار پر منفی اثرات

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پیر کو بھارتی سینسیکس 608 پوائنٹس نیچے کھلا

بہار کے انتخابی نتائج کا ہندوستان کے حصص بازار پر واضح اثر نظر آ رہا ہے۔

پیر کو سٹاک مارکیٹ کے کھلنے کے ساتھ ہی سینسیکس اور نفٹی میں شدید گراوٹ نظر آئي۔ اس کے علاوہ روپے کی قیمت میں بھی کمی آئی ہے۔

سینسیکس 600 پوائنٹس سے زیادہ گر کر25,690.90 کی سطح پر کھلا جبکہ نفٹي 173 پوائنٹس کی کمی کے ساتھ 7،782 کی سطح پر کھلا۔

حصص بازار میں کاروبار کرنے والے اس بڑی گراوٹ کی وجہ بہار اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کی شکست فاش کو بتا رہے ہیں جہاں انھیں 243 سیٹوں میں سے محض 58 سیٹیں ہی ملیں جبکہ نتیش کمار کے وسیع اتحاد کو 178 سیٹیں ملیں۔

فی الحال سنسیکس اور نفٹي میں تقریبا 1.5 فیصد کی کمی جاری ہے۔ یہ کمی گذشتہ کئی مہینوں سے نظر آ رہی ہے تاہم بھارتی وزیر خزانہ ارون جیٹلی کا کہنا ہے کہ بہار اسمبلی انتخابات کا معاشی اصلاحات کے سلسلے پر کوئي اثر نہیں پڑے گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ PTI
Image caption وزیر خزانہ ارون جیٹلی کا کہنا ہے کہ بہار نتائج کا معیشت پر اثرات مرتب نہیں ہوں گے

بھارتی خبر رساں ادارے پی ٹی آئی کے مطابق انھوں نے کہا: ’میں اسے معیشت کو دھچکے کے طور پر نہیں دیکھتا۔۔۔ بنیادی اصلاحات جاری رہیں گي اور انھیں تیزی کے ساتھ جاری رہنا چاہیے۔‘

دریں اثنا امریکی ڈالر کے مقابلے روپے کی قیمت میں بھی کمی دیکھی جا رہی ہے۔ پیر کو اس میں ڈالر کے مقابلے 74 پیسے کی کمی آئی ہے اور اب یہ روپے 66.50 فی ڈالر ہو گیا ہے

بہار نتائج کے ساتھ ساتھ فیڈرل ریزرو کی جانب سے شرحوں میں اضافے کے خدشات کا اثر بھی روپے پر نظر آ رہا ہے۔

اسی بارے میں